جمعرات 21 جون 2018ء
جمعرات 21 جون 2018ء

چینی کمپنی کا پاکستان میں الیکٹرک گاڑیاں متعارف کرانے کا اعلان

 اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) چائنہ کی ایک کمپنی نے پاکستان میں الیکٹرک گاڑیاں متعارف کرانے کا اعلان کردیا۔چینی شہر لانزو کے تجارتی وفد نے اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کا دورہ کیا اور تاجر برادری کے ساتھ باہمی دلچسپی کے شعبوں میں کاروباری شراکتیں قائم کرنے میں دلچسپی کا اظہار کیا۔وفد میں اسکیلیٹرز، ایلیویٹرز اور لفٹیں تیار کرنے، بیٹری سے چلنے والی گاڑیاں بنانے والی فرمز سمیت دیگر کمپنیوں کے نمائندگان شامل تھے۔ چینی وفد کے سربراہ سویسیان پے نے کہا کہ چینی کمپنی ایسٹرن ایلیویٹرز بلند عمارتوں، ایئرپورٹس اور بڑے شاپنگ مالز میں استعمال ہونے والے ہیوی ڈیوٹی اسکیلیٹرز، ایلیویٹرز اور لفٹیں تیار کرتی ہے جو اپنے اعلی معیار اور بہتر سروس کی وجہ سے مشہور ہے۔وفد میں شامل بیٹری سے چلنے والی گاڑیاں بنانے والی کمپنی پاکستان میں اس گاڑی کو متعارف کرانا چاہتی ہے، گاڑی کی بیٹری 6 سے 8 گھنٹے میں فل چارج ہو جاتی ہے جو 150 کلومیٹر تک چلتی ہے، گاڑی کو دوبارہ چارج کرنے کے لیے ری چارجنگ اسٹیشن قائم کیے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کا دورہ کرنے کا مقصد ان شعبوں میں کاروباری شراکتیں قائم کرنے کے لیے مقامی پارٹنرز کو تلاش کرنا ہے۔تجارتی وفد کا کہنا تھا کہ چین پاکستان اقتصادی راہداری نے چین اور پاکستان کو طویل المدت پارٹنرشپ کی راہ پر ڈال دیا ہے اور وہ پاکستان کی تاجر برادری کے ساتھ باہمی فائدہ مند کاروباری شراکتیں قائم کرنا چاہتے ہیں۔اسلام آباد چیمبرکے سینئر نائب صدر محمد نوید نے اس موقع پر کہا کہ سی پیک کی وجہ سے پاکستان میں مختلف شعبوں میں کاروبار اور سرمایہ کاری کے بہت سے نئے مواقع پیدا ہو چکے ہیں یہ مناسب وقت ہے کہ چینی سرمایہ کار پاکستان میں ٹیکنالوجی کی منتقلی کر کے دلچسپی کے شعبوں میں جوائنٹ وینچرز پر توجہ دیں، پاکستان میں بہت سے نئے تعمیراتی منصوبوں پر کام جاری ہے جن میں ہیوی ڈیوٹی اسکیلیٹرز، ایلیویٹرز اور لفٹوں کی طلب موجود ہے۔محمد نوید نے مزید کہا کہ چینی سرمایہ کار پاکستان میں ہی یہ مصنوعات تیار کی صنعت لگانے کی کوشش کریں جس سے وہ پاکستان کی ضرورت پوری کرنے کے ساتھ خطے کے ممالک کو اپنی مصنوعات برآمد کرنے کے قابل ہوں گے۔ محمد نوید نے کہا کہ اسلام آباد چیمبر سی پیک سہولتی مرکز قائم کرے گا جس میں چیمبر کے ممبران کو چینی زبان بھی سکھائی جائے گی تاکہ وہ چین کے نجی شعبہ کے ساتھ بات چیت کرنے اور کاروباری معاملات طے کرنے میں سہولت محسوس کریں۔چیمبر کے نائب صدر نثار مرزا نے امید ظاہر کی کہ چینی وفد کے دورے سے دونوں ممالک کے نجی شعبوں کے درمیان کاروباری شراکتیں قائم کرنے کی طرف مثبت پیش رفت ہوگی۔