بدھ 20 جون 2018ء
بدھ 20 جون 2018ء

لبریشن فرنٹ یکجہتی مارچ،گرفتار شدگان کی غیر مشروط رہائی

راولاکوٹ ، ہجیرہ، تتہ پانی ، کھائی گلہ (سٹی رپورٹر،نمائندگان،پ ر)جموں و کشمیر لبریشن فرنٹ (جے کے ایل ایف ) کی اپیل پر کیے گے یکجہتی مارچ کے شرکاءنے دھر بازار میں دئیے گے دھرنا کو جمعہ اور ہفتہ رات گے انتظامیہ سے مذاکرات کے بعد ختم کر دیا جبکہ گرفتار کیے گئے تمام افراد غیر مشروط رہا کر دئیے گے۔جمعہ کو احتجاج کے دوران پیش آنے والے واقعہ کے حوالے سے آج پونچھ کے مختلف شہروں میں دوبارہ احتجاج بھی کیا گیا ۔جبکہ جے کے ایل ایف کے ایک وفد نے ہفتے کی صبح ڈپٹی کمشنر راولاکوٹ سے ان کے دفتر میں ملاقات کی جس کے بعد گرفتار شدگان کو رہا کر دیا گیا،رہائی پانے والوں میں وہ افراد بھی شامل ہیں جنہیں احتجاجی مارچ سے واپسی پر راولاکوٹ پولیس نے گرفتار کر کے ہجیرہ پولیس کے حوالے کیا تھا ۔ان میں باغ اور تھوراڑ کے جے کے ایل ایف کے کارکنان شامل تھے۔راولاکوٹ میں جے کے ایل ایف اور این ایس ایف نے علیحدہ ، علیحدہ احتجاج کیا اور جمعہ کے واقعہ کی مذمت کی۔مقررین نے مطالبہ کیا کہ گرفتار افراد پر قائم مقدمات کو ختم کیا جائے۔ تتہ پانی سے نامہ نگار کے مطابق جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے مرکزی راہنماءعبدالرحیم ملک، اسٹنٹ سیکرٹری لبریشن فرنٹ آزادکشمیر گلگت بلتستان زون ایازکریم ،ممبرسنڑل ایگزیکٹوکمیٹی ایس ایل ایف سردار غلام اویس نے ایک ہنگامی پریس سے خطاب کرتے ہوئے کہاہے کہ جموںکشمیر لبریشن فرنٹ کی کال پر تتہ پانی تا مدارپور سیز فائرلائن متاثرین یکجہتی امن مارچ کو کامیاب بنانے پر جے کے ایل ایف اور ایس ایل ایف کے تمام کارکنان بالعموم اوربالخصوص تتہ پانی کی تمام سیاسی جماعتوں، طلبہ، سول سوسائٹی ، انجمن تاجران ،صحافی برداری اور دیگر افراد کے مشکورہیں ،امن مارچ پر پویس کی غنڈہ گردی کے گھناﺅنے اور شرمناک عمل کی پرزور مذمت کرتے ہیں ، اس موقع پرآرگنائزر لبریشن فرنٹ تتہ پانی سردار ظہیر احمد خان،عدنان الیاس،ابرار ملک، آصف یاسین ، ناصر ذوالفقار، مطیع رضا، ضیافت علی شاہ، احتشام حمید، وقار چوہدری ، مبشر رسول ملک اور دیگر بھی موجود تھے ، ان رہنماﺅں نے اعلان کیا کہ آج 18مارچ بروز اتوار دن دس بجے تتہ پانی کے مقام پر اظہار تشکر ومذمت ریلی کا انعقادہوگا ۔ہجیرہ سے نامہ نگارکے مطابق جموں کشمیر لبریشن فرنٹ وسٹوڈنٹس لبریشن فرنٹ آزادکشمیر کے زیر اہتما م متاثرین سیز فائر لائن کے ساتھ اظہار یکجہتی مارچ میں پولیس اور مظاہرین میں مختلف جھڑپوں کے بعد مظاہرین نے رات گئے دھر بازار میں طویل دھرنا دیا ،دھر بازار میں دیئے جانے والے دھر نے کے شرکاءسے خطاب کرتے ہوئے عبدالحمید بٹ،ڈاکٹر توقیر گیلانی، سلیم ہارون ، مرکزی چیف آرگنائزرراجہ حق نوازخان، رفیق ڈار،خواجہ منظور چشتی،طفیل عجائب،توصیف جرال،یوسف چوہدری،محترمہ طاہرہ توقیر، سردار انور ایڈوکیٹ،سردار رشیدخان،قاری نصیر،شکیل چوہدری ایڈوکیٹ،عبدالرحیم ملک، ایاز کریم ،سردار مشتاق احمد خان،نصرت قریشی،ضیا ءالدین گلگتی،سہیل احمد کٹاریہ، لیاقت ملک،سردار فیاض، طاہر بشیر، ہارون سرور، نزاکت علی،ودیگر نے لاٹھی چارج کی مذمت کرتے ہوئے کہاکہ پُرامن مارچ پر پولیس کی طرف سے لاٹھی چارچ اور شیلنگ قابل مذمت عمل ہے ، جموں کشمیر نیپ کے مرکزی صدر سردار لیاقت حیات ، جے کے ایل ایف کے مرکزی رہنماءقاری نصیر سمیت 16نامزد اور 150نامعلوم شرکاءمارچ کے خلاف زیر دفعات324/353/337/ /186/147/148/149/427/اے پی سی مقدمات درج کیے گئے ہیں۔ کھائی گلہ سے نمائندہ خصوصی کے مطابق جموں کشمیر لبریشن فرنٹ ¾ جموں کشمیر نیشنل عوامی پارٹی ¾ نیشنل اسٹوڈنٹس فیڈریشن ¾ سٹوڈنٹس لبریشن فرنٹ کا مشترکہ اجلاس چھوٹا گلہ کے مقام پر منعقد ہوا۔ اجلاس میں جے کے ایل ایف کے مرکزی رہنما نذر کلیم ¾ سردار جنت حسین ¾ نیشنل عوامی پارٹی کے سینئر رہنما اعجاز عزیز ¾ رحمان خلیل ¾ این ایس ایف کے ممبر سی سی سہیل اکبر ¾ واجد خان ¾ ذیشان عزیز ¾ آصف رشید نے اپنے مشترکہ اجلاس میں لبریشن فرنٹ کے پرامن یکجہتی مارچ پر لاٹھی چارج اور فائرنگ کی بھرپور مذمت کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ ضلعی انتظامیہ کی طرف سے وحشیانہ تشدد اور اس کے نتیجے میں شدید زخمی نعیم بٹ اور دیگر ساتھیوں کو زخمی کرنے پر فی الفور جوڈیشل انکوائری ہائیکورٹ کے جج سے کروائی جائے اور اس گھناﺅنے عمل میں شریک افراد کو قرار واقعی سزا دی جائے۔ دو دن کے اندر اندر ایسا نہ کیا گیا تو چھوٹا گلہ میں پہیہ جام ہڑتال کی جائے گی۔عباسپورسے تحصیل رپورٹرکے مطابق جمو ں کشمیر لبریشن فرنٹ عبا سپو ر کے رہنما سردار عابدایوب ایڈووکیٹ ،سردارمحمد حیات خان ،سردا ر یوسف چغتا ئی،مدثرامتیاز،شاہجہاں ارشد نے اپنے ایک بیا ن میں کہا کہ لبریشن فرنٹ کے پرچمو ں کے سا تھ سفید جھنڈے بھی تھے جو اس با ت کی دلیل تھی کہ ہم ایل او سی پر ہو نے وا لی دہشتگر دی فا ئرنگ کے خلا ف خوا تین ،بچے ،جوان پر امن احتجا جی ما رچ ریکا رڈ کرا نا چا ہتے تھے اس مو قع پر دشمن کی طرف سے جلو س پر دہشتگردی کا خطرہ تھا مگر ایل او سی کے اس پا ر اپنو ں نے ہی پرا من لو گو ں پر تشدد آنسو گیس لا ٹھی چا رج کر کے بد ترین مثا ل قا ئم کی ہے۔راولاکوٹ انجمن تاجران کی طرف سے جاری پریس ریلیز کے مطابق مدار پور میں لبریشن فرنٹ کے پر امن مظاہرین پر فائرنگ ، شیلنگ اور تشدد ریاستی دہشت گردی ہے ۔ اس واقع میں ملوث افسران کو معطل کر کے جو ڈیشنل انکوائری کروائی جائے۔ راولاکوٹ انجمن تاجران اس گھناونے کھیل کی مذمت کرتی ہے۔ ان خیالات کا اظہارمرکزی انجمن تاجران کے سپریم ہیڈ و صدر راولاکوٹ انجمن تاجران سردار عبد النعیم خان ، مرکزی ترجمان وسیم خورشید، سنیئر نائب صدر عمر نذیر کشمیری ،سردار مصطفی سعید ،ڈپٹی جنر ل سیکرٹری شاہد خورشید ، راجہ امتیاز اور خالد محمود نے مشترکہ بیان میں کیا ۔