پیر 23 جولائی 2018ء
پیر 23 جولائی 2018ء

عالمی برادری کشمیریوں کے قتل عام کا نوٹس لے،صدر آزاد کشمیر

راولاکوٹ(دھرتی نیوز)صدر آزاد کشمیر سردار مسعود خان نے مقبوضہ کشمیر میں نہتے کشمیری نوجوانوں پر بھارتی جا رحیت کی سخت الفاظ میں مذمت کی اور عالمی برادر ی سے مطالبہ کیا کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں کا نوٹس لے ۔انھوں نے کہا کہ ہمیں متحد ہو کر اپنی آواز کو عالمی برادری تک پہنچانا ہوگا ۔جموں کشمیر کے عوام حق خود ارادیت کیلئے جدوجہد کر رہے ہیں جو ان کا پیدائشی حق ہے ۔مقبوضہ کشمیر کے عوام کا نقطہ نظر واضع انداز میں دنیا تک پہنچانا ہماری اجتماعی ذمہ داری ہے ۔اقوام متحدہ کی سیکورٹی کونسل مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کا نوٹس لے ۔وہ گذشتہ روزجامعہ پونچھ کے” تراڑ“کیمپس کا سنگ بنیاد رکھنے کیلئے جامعہ پونچھ کے زیر ہتمام منعقدہ تقریب سے خطاب کر رہے تھے ۔اس موقع پر جامعہ پونچھ راولاکوٹ کے فیکلٹی ممبران ،انتظامی افسران ،تعمیراتی کمپنی کے ذمہ داران سمیت مقامی سیاسی و سماجی رہنماﺅ ںکی بڑی تعدداد بھی موجود تھی۔شیخ الجامعہ پروفیسر ڈاکٹر محمد رسول جان نے صدر ریاست مسعود خان اور دیگر مہمانوں کو خوش آمدید کہا جبکہ تعمیراتی منصوبے کے خدوخال سے آگاہ کیا جبکہ ڈین فیکلٹی آف بیسک اینڈ اپلائیڈ سائنسز و ڈائریکٹر فنانس پروفیسر ڈاکٹر عبدالحمید نے یونیورسٹی آف پونچھ راولاکوٹ سے متعلق تفصیل کیساتھ بریفنگ دی۔”تراڑ “کے مقام پر منصوبے کا سنگ بنیاد رکھنے کے بعد صدر ریاست مسعود خان نے یونیورسٹی کے شعبہ ویٹر نر ی اینڈانیمل سائنسز میں جامعہ کے فیکلٹی ممبران ،طلبہ اور سول سوسائٹی کے افراد سے خطاب کرتے ہو ئے کہا کہ ہماری منزل ایک مضبوط اور مستحکم قوم بننا ہے ۔اس منزل کے حصول کیلئے سخت محنت، جدوجہداور اتحاد اور اتفاق کی ضرورت ہے ۔صدر مسعود خان نے جامعہ پونچھ کے میگاپروجیکٹ کی راہ میں حائل تمام رکاوٹیں دور کرنے پر رئیس جامعہ پروفیسر Emeritusڈاکٹر محمد رسول جان اور جامعہ کے تمام تدریسی اور انتظامی عملے کی کو ششوں کو سراہا او ر مبارکباد پیش کی ۔انھوں نے طلبہ پر زور دیا کہ اپنے آپ کو دورجدید سے ہم آہنگ کر نے کیلئے اپنے آپ کو تیار کریں ۔ہماری جامعات کو مقدار کیساتھ معیار پر بھی خصوصی توجہ دینا ہو گی ۔کامیابی کیلئے محنت ڈسپلن اور کردار سازی پر توجہ مرکوزکرنا ہو گی ۔انھوں نے کہا کہ ترقی پزیر ممالک کی ترقی کا دارومدار تعلیم پر ہے اس لئے جامعات پر یہ بھاری زمہ داری عائد ہو تی ہے کہ وہ طلبہ کی کردارسازی سمیت تمام شعبوں میں بہترین تربیت کریں ۔حکومت کی زمہ داری ہے کہ وہ طلبہ کی تعلیم و تربیت کیلئے اچھا ماحول فراہم کرے اس مقصد کیلئے ہرممکن کوششیں کی جارہی ہیں ۔ہم مقابلے کی دنیا میں رہ رہے ہیں اس لیئے عصر حاضر کے تقاضوں کے مطابق اپنے آپ کو تیار جبکہ پر عزم ہو کر آگے بڑھنا ہو گا ۔  

آج کااخبار

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

کالم