اتوار 21 اکتوبر 2018ء
اتوار 21 اکتوبر 2018ء

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی مظاہرین پر فائرنگ سے طالب علم شہید

سرینگر(اے این این ) مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی مظاہرین پر فائرنگ سے طالب علم شہید ،متعدد زخمی ، اسلامک یونیورسٹی کے باہر ہوائی فائرنگ،طلبا اور پولیس میں تصادم ،پتھراﺅ اور شلنگ،کولگام میں تھانے پر دستی بم سے حملہ 3اہلکار زخمی ،حیدر پورہ میں ہتھیار چھیننے کا واقعہ، چار پولیس اہلکار معطل اور گرفتار پوچگ گچھ شروع،پانپور میں اسلحہ چھیننے کی کوشش ناکام بنانےکا دعویٰ ، تین نوجوان پستول سمیت گرفتار،وادی میں شہری ہلاکتوں کےخلاف احتجاج اور ہڑتال کا سلسلہ جاری ،کاروباری مراکز اور تجارتی ادارے بند،انٹر نیٹ اور موبائل سروس بھی بحال نہ ہو سکی ۔تفصیلات کے مطابق جنوبی کشمیر کے ا ننت ناگ قصبہ میں کار میں سوار جنگجوﺅں نے سی آر پی ایف کی ایک پٹرولنگ پارٹی پر فائر نگ کی، جس کے نتیجے میں شوپیان کے ایک جوان سال طالب علم کو گولی لگی جو بعد میں چل بسا۔ادھر کولگام پولیس سٹیشن پر جنگجوﺅں نے گرینیڈ پھینکا جس کے نتیجے میں 2پولیس اہلکار اور ایک شہری زخمی ہوئے۔پولیس نے بتایا کہ سہ پہر قرب 2 بجکر 20 منٹ پر لاز بل اننت ناگ میں کار زیر نمبر JK03B/1-4- میں سوار مسلح افراد نے سی آر پی ایف اہلکاروں کو نشانہ بنانے کی غرض سے فائرنگ کی تاہم اسی دوران وہاں سے گذر رہی ایک ٹاٹا سومو میں سوارایک طالب علم کو گولی لگی اور وہ شدید زخمی ہوا۔پولیس نے بتایا کہ فائر نگ کے اس واقعہ میں 20 سالہ طالب علم شفائق شبیر ولد شبیر احمد شاہ ساکن کھار پورہ ہرگام شوپیان زخمی ہوا ۔اسے پہلے مقامی اسپتال منتقل کیا گیا جہاں ڈاکٹروں نے اسکی حا لت ناز ک قرار دیکر اسے صورہ ریفر کیا تاہم وہ بجبہاڑہ کے نزدیک راستے میں ہی دم توڑ بیٹھا۔شفائق کی چھاتی میں گو لی لگی تھی جس سے وہ جانبر نہیں ہو سکا۔