هفته 26 مئی 2018ء
هفته 26 مئی 2018ء

پولیس اہلکار شہباز احمد کی موت ، چیف جسٹس سپریم کورٹ کا نوٹس

راولاکوٹ ( دھرتی نیوز ) پولیس اہلکار شہباز احمد کے قتل کی ایف آئی آر عدالتی حکم کے باوجود درج نہ ہونے پر چیف جسٹس سپریم کورٹ جسٹس چوہدری ابراہیم ضیاءکا سخت نوٹس ، ایس ایس پی پونچھ کو ایک ہفتہ میں عدالتی حکم پر عملدرآمد کرتے ہوئے رجسٹرار آفس مظفرآباد کو رپورٹ کرنے کا حکم دے دیا ، واضح رہے ڈسٹرکٹ کورٹ راولاکوٹ نے تین سال قبل قتل ہونے والے سنگولہ کے رہائشی 23سالہ نوجوان پولیس سپاہی شہباز احمد کے قتل کی ایف آئی آر دو نامزد پولیس اہلکاروں زاہد نذیر اور عبدالحمید کےخلاف درج کرنے کا حکم مورخہ 27-04-18 کو دیا تھا گیارہ دن تک عدالتی حکم کی خلاف ورزی پر گزشتہ روز مقتول کے بھائی اعجاز احمد نے توہین عدالت کی درخواست دائر کی تھی مگر فوری طور پر پولیس حکام کی سر زنش کرتے ہوئے عدالتی حکم پر عملدرآمد کرنے کا حکم دینے کے بجائے ڈسٹرکٹ جج راولاکوٹ امیر اللہ مغل نے مزید ایک ہفتہ کی تاریخ دے کر معاملہ کو مزید تاخیر کا شکار کر دیا تو مقتول کا بھائی مسلسل تاخیر سے تنگ آ کر تحریری درخواست لیکر چیف جسٹس سپریم کورٹ جو ان دنوں مقدمات کی سماعت کے سلسلے میں راولاکوٹ کے دورے پر ہیں کے پاس پہنچ گیا جنہوں نے سخت نوٹس لیتے ہوئے پولیس حکام ایس ایس پی پونچھ کو عدالتی حکم پر عملدرآمد کر کے ایک ہفتہ کے اندر رجسٹرار آفس مظفرآباد میں رپورٹ کرنے کا حکم دے دیا ۔