منگل 20 نومبر 2018ء
منگل 20 نومبر 2018ء

نیلم،پل ٹوٹنے سے 35 سیاح ڈوب گئے،7 جاں بحق

مظفرآباد+نیلم (صباح نیوز)نیلم کے مقام پر پل ٹوٹنے کے حادثے میں جاں بحق افراد کی تعداد7 ہو گئی ہے جبکہ 9 افراد لاپتہ ہیں جن کی تلاش جاری ہے۔ فوری امدادی کاموں کی وجہ سے 11افراد کو بچا لیا گیا جن میں ابرار، ہمزہ، عدیل، ولید، زبیر، لاریب، انم، اقراء، علینہ( میڈیکل کالج) ، ثناءمیر اور علینہ(کپس) شامل ہیں۔آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی ہدایت پر نیلم میں دو ہیلی کاپٹرز امدای کارروائیوں میں مصروف،آئی ایس پی آر کے مطابق ایس ایس جی کمانڈوز دریائے نیلم میں ڈوب جانے والوں کی لاشیں تلاش کرنے میں مصروف ہیں۔وزیراعظم آزادکشمیر راجہ فاروق حیدر خان تمام مصروفیات چھوڑ کر نیلم پہنچ گئے،غفلت کے مرتکب سرکاری عہدیداران واہلکاران کے خلاف کارروائی کا حکم دے دیا۔سپیکر شاہ غلام قادر پہلے سے نیلم میں موجود ہیں وزیراعظم،سپیکر اور بریگیڈ کمانڈر کے علاوہ اعلیٰ سول وفوجی حکام شدید بارش کے باوجود امدادی سرگرمیوں کی خود نگرانی کررہے ہیں ۔ضلع نیلم سے موصولہ اطلاعات کے مطابق سیروسیاحت کی غرض سے آئے فیصل آباد کپس کالج ،شریف میڈیکل کالج لاہور اور لاہور میڈیکل اینڈ ڈیٹل کالج کی تین کوسٹرز نمبر 725،976،7244 میں طلباءو طالبات کی کل تعداد 72کے قریب تھی جن میں 35 کے قریب طلباءو طالبات انتہائی کمزور اور ناقص میٹریل سے بنے پل پر کھڑے سیلفیاں بنا رہے تھے کہ اچانک پل کمزور بنیادوں سے ہی اکھڑ کر نالہ میں جاگرا جن میں سے تقریباً 24 کے قریب لوگ نالہ جاگراں میں گر گئے فوری طور پر 4افراد کو زندہ بچالیا گیا جبکہ 5 نعشوں اور 7 افراد کو زخمی حالت میں دریائے نیلم سے زندہ بچالیا جبکہ 8کے قریب لوگ لاپتہ ہیں ۔11زخمیوں میں سے 6مرد 5خواتین شامل ہیں جن میں بورے والا کے ابرار،فیصل آباد کے حمزہ،عدیل ،ولید،زبیر،انعم،ثناءمنیر،جبکہ ساہیوال کی علینہ اور اقراء،جھنگ کی علینہ شامل ہیں۔تمام افراد معمولی زخمی ہیں اور ان کی حالت خطرے سے باہر ہے جنہیں پاک فوج کے خصوصی ہیلی کاپٹر کے ذریعے مظفرآباد تک پہنچانے کا بندوبست کرلیا گیا ہے جبکہ مرنے والے 5نوجوانوں جن میں فیصل آباد کے حماد،معظم شہزاد اور عبدالرحمن سعید جبکہ اسلام آباد کے ندیم شامل ہیں۔تمام مرنے والوں کی عمریں 26سے 38سال کے درمیان ہیں۔نیلم تامظفرآباد 50کلو میٹر سے زاید دریائی پٹی پریسکیو کارروائیاںجاری ہیں مگر پانی کے شدید تیز بہاﺅ اور ٹھنڈے ہونے کی وجہ سے رضا کاروں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ نیلم جہلم ہائیڈل پراجیکٹ نوسیری سائیٹ پر دریائے نیلم پر بنائے گئے انٹیک گیٹ بند کردیئے گئے ہیں تاکہ ممکنہ طورپر نعشیں مزید آگے نہ جاسکیں اور ڈیم میں نعشوں کی تلاشی میں آسانی ہو ۔وزیراعظم آزادکشمیر کے حکم پر کمشنر مظفرآباد چوہدری امتیاز احمد نے واقعہ سے متعلق لواحقین کی معلومات کیلئے مظفرآباد میں کنٹرول روم قائم کردیا ہے عوام الناس 05822920097پر کال کر کے معلومات حاصل کر سکتے ہیں۔ ڈپٹی کمشنر نیلم، ایس پی،ایڈمنسٹریٹر ضلع کونسل و دیگر موقع پر موجود ہیں جبکہ پاک فوج کی ریسکیو ٹیم بھی کارروائیوں میں حصہ لے رہی ہے۔