بدھ 26  ستمبر 2018ء
بدھ 26  ستمبر 2018ء

محکمہ سماجی بہبودغیر فعال ، راولاکوٹ سمیت پانچ اضلاع سے 168آسامیاں ویمن ڈویلپمنٹ میں منتقل

  راولاکوٹ (دھرتی نیوز) حکومت آزادکشمیر نے محکمہ سماجی بہبود کو عملاً ختم کرنےکی سمری تیار کر لی اور محکمہ سماجی بہبود سے ڈپٹی ڈائریکٹر گریڈ اٹھارہ کی دوآسامیوں سمیت 168سے دیگر آسامیوں کو محکمہ ویمن ڈویلپمنٹ میں منتقل کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کردیا جبکہ پانچ اضلاع ، مظفرآباد ، باغ ، راولاکوٹ ، میرپور ، کوٹلی میں سماجی بہبود کے زیر انتظام قائم دارالفلاح ، رورل سینٹرز ، کاشانہ سینٹرزکومحکمہ ویمن ڈویلپمنٹ میں ضم کردیا گیا اور یہ پانچ دارالفلاح نیلم ، ہٹیاں ، حویلی ، سدھنوتی ، بھمبر میں بمعہ سٹاف منتقل کردیا گیا ، راولاکوٹ اور میرپور سے ڈپٹی ڈائریکٹرز گریڈ اٹھارہ کی آسامیوں کو ویمن ڈویلپمنٹ ڈائریکٹوریٹ مظفرآباد بطور ڈپٹی ڈائریکٹر پلاننگ ، ڈپٹی ڈائریکٹر جینڈر منتقل کیا گیا ہے ، جاری نوٹیفکیشن کے مطابق محکمہ سماجی بہبود کے ضلعی دفاتر میں غیر جریدہ ملازمین کی آسامیوں کو منتقل کرکے انہیں دوسرے اضلاع میں تعینات کیا گیا ہے ، ان سٹاف ممبران میں خواتین بھی شامل ہیں ، اب سماجی بہبود کے ضلعی دفاتر میں محض سوشل ویلفیئر آفیسر جونیئر کلر ک اور ڈرائیور کی آسامیاں رکھی گئی ہیں ، واضح رہے کہ ویمن ڈویلپمنٹ ڈائریکٹوریٹ مظفرآباد میں پہلے سے ڈٹپی ڈائریکٹر ، ڈائریکٹر کی آسامیاں موجود ہیں ، ذرائع کے مطابق ان آسامیوں کو منتقل کرنے کا مقصد محکمہ ویمن ڈویلپمنٹ میں تعینات ڈائریکٹر قدسیہ بتول کو ڈائریکٹر جنرل کے عہدے پر تعینات کرنا ہے اور محترمہ قدسیہ بتول نے متعلقہ وزراءکو جھانسہ دیکر ان آسامیوں کو منتقل کرنے پر راضی کیا اور انہیں یہ جھانسہ دیا کہ ان من پسند افراد کو ان جگہوں پر ایڈجسٹ کیا جائیگا ، یہ تمام کارروائی ڈائریکٹر قدسیہ بتول نے ایسے وقت میں کی جب وزیر سماجی بہبودو ترقی نسواں محترمہ نورین عارف بیرون ملک دورے پر تھیں ، وزیر سماجی بہبود نے واپسی سے ڈائریکٹر قدسیہ بتول کی خوب سرزنش کی جس پر ڈائریکٹر رو پڑیں اور موقع پر موجود بعض دیگر افسران نے معاملہ کو سرد کروایا۔ خیال رہے کہ جو ادارے ختم کئے گئے یہ بیواﺅں ، مطلقہ اور غریب خواتین کی فلاح کے ادارے تھے ،،ان آسامیوں کی منتقلی پر سیاسی و سماجی رہنماﺅں نے سخت برہمی کا اظہار کیا ہے اور صدر آزادکشمیر سردار مسعود خان ، ممبر قانون ساز اسمبلی سردار خالد ابراہیم خان سمیت دیگر مقامی رہنماﺅں سے مطالبہ کیا ہے وہ اس جانب توجہ دیں اور آسامیوں کو منتقل ہونے سے بچائیں ۔ ادھر تنظیم غیر جریدہ ملازمین ضلع پونچھ کا ایک اجلاس ضلعی صدر سردار جاوید عزیز خان کی صدارت میں منعقد ہوا ۔ اجلاس میں ملازمین غیر جریدہ اور عوامی زعماءنے بھی شرکت کی ۔ اجلاس میں ٹیوٹا کے ذیلی ادارے سماجی بہبود سوشل ویلفیئر (دار الفلاح ) کی راولاکوٹ سے منتقلی اور خواتین کو سلائی کڑھائی کی تعلیم وتربیت دینے والی انسٹرکٹر کے دوسرے ضلع میں تبادلے کی سازش کی بھرپور انداز میں مذمت کرتے ہوئے کہا گیا کہ اگر پندرہ مئی تک اس معاملے کو یکسو کرتے ہو ئے سابق صورت حال کو بحال نہ کیاگیا تو ملازمین اور عوام علاقہ ضلع پونچھ کے خلاف کی جانے والی اس سازش پر سخت احتجاج اور راست اقد ام سے بھی گریز نہیں کریں گے اور حالات کی سنگینی کی ذمہ داری ملازمین اور عوام علاقہ پر نہیں ہوگی ۔ انہو ںنے کہاکہ جس ادارے کو منتقل کیا جارہا ہے اس میں اس وقت سو سے زائد بیوہ ، یتیم ، معزور ، مفلس اور نادار خواتین سلائی کڑھائی کی تربیت حاصل کررہی ہیں انہوں نے کہا کہ راولاکوٹ حلقہ تین کو لاوارث سمجھ کر انہونے اقدامات کیے جارہے ہیں ۔