جمعرات 13 دسمبر 2018ء
جمعرات 13 دسمبر 2018ء

آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان کو انتظامی و مالی خودمختاری دینے کا فیصلہ

اسلام آباد(دھرتی نیوز)وزیر اعظم پاکستان شاہد خاقان عباسی کی زیر صدارت قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں آزادکشمیر اور گلگت بلتستان کو انتظامی و مالی خودمختاری دینے اور آزادکشمیر میں نافذ عبوری ایکٹ 1974 میں ترامیم کی بھی منظوری دے دی گئی جبکہ کشمیر وگلگت کونسل کے اختیارات آئینی حد تک محدود کر دیئے گئے۔اجلاس میں تینوں مسلح افواج کے سربراہان، وزیرداخلہ ،وزیرخارجہ اوردفاع بھی شریک ہوئے۔اجلاس میں آزادکشمیر اور گلگت بلتستان کو مالی و انتظامی طور پر خودمختاری دینے کے حوالے سے گزشتہ دور میں ہونے والی پیش رفت کا جائزہ لیا گیا اور دونوں مقامی حکومتوں کی طرف سے حتمی تجاویز زیر بحث آئیں جس کے بعد اجلاس میں شریک تمام سٹیک ہولڈرز نے اتفاق کیا کہ دونوں مقامی حکومتوں کو با اختیار کیا جائے۔ اس مقصد کیلئے آزادکشمیر میں نافذ عبوری ایکٹ 74 میں ترامیم کرنے کی بھی منظوری دے دی گئی۔خیال ہے کہ20 مئی کو وہ قومی سلامتی کمیٹی اجلاس کی رپورٹ کا تفصیلی جائزہ لینے کے بعد ہی اس پیش رفت بارے وزیر اعظم آزادکشمیر اپنا اظہار خیال کریںگے۔ تجزیہ کار اس اہم پیش رفت کو آزادکشمیر کے وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر کی بڑی کامیابی قرار دیا ہے۔اجلاس میں علاقائی سلامتی،کنڑول لائن پر بھارتی جارحیت کا معاملہ زیر غور لایا گیا اور قومی و داخلی سلامتی کے معاملات پر بھی بریفنگ لی گئی۔واضح رہے کہ اس سے قبل بھی 14 مئی کو قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس طلب کیا گیا تھا، جس میں فاٹا کو صوبہ پختونخواہ کا حصہ بنائے جانے کی منظوری سمیت سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف کے ممبئی حملوں کے حوالے سے متنازع بیان کو زیر بحث لایا گیا تھا۔

آج کااخبار

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

کالم