بدھ 26  ستمبر 2018ء
بدھ 26  ستمبر 2018ء

حکومت آزاد کشمیر پر پونچھ دشمنی کا الزام،پی پی پی نے چارج شیٹ جاری کر دی

راولاکوٹ (سہیل خان سے) سابق صدرریاست جموں کشمیر و سابق وزیر اعظم آزادکشمیر حاجی سردار محمد یعقوب خان ، سابق وزیر حکومت اور پاکستان پیپلزپارٹی آزادکشمیر کے جنرل سیکرٹری راجہ فیصل ممتاز راٹھور ، سابق وزیر حکومت سردار عابد حسین عابد نے کہا ہے کہ آزادکشمیر کی موجودہ حکومت دو سال سے زائد عرصہ گزر جانے کے باوجود تعمیر وترقی کیلئے کوئی اقدامات نہیں کر سکی ہے موجودہ حکومت کی طرف سے پونچھ ڈوثیرن کے لوگوں کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک روا رکھاجارہا ہے، میڈیکل کالج پونچھ راولاکوٹ کے خلاف سازشیں ہور ہی ہیں یونیورسٹی آف پونچھ کا تعمیراتی کام بند ہے، راولاکوٹ ائیر پورٹ کا کام شروع نہیں کیاگیا ہے، ڈسٹرکٹ ہیڈ کواٹر ہسپتال چیک راولاکوٹ کیلئے بجٹ میں فنڈز مختص نہیں کیے گئے ہیں ۔ پیپلزپارٹی کے دور میں شروع کیے گئے جو منصوبہ جات ادھورے تھے انہیں مکمل نہیں کیاجارہا ہے، آزادکشمیر کی موجودہ حکومت پونچھ دشمنی پر اتر آئی ہے موجود ہ حکومت کو اپنی کارکردگی دکھانے کیلئے دو سال سے زائد کا عرصہ دیا لیکن کارکردگی صفر ہے مزید وقت نہیں دیاجاسکتا ۔اگر حکومت کی یہی روش رہی تو کچھ دنوں بعد آزادکشمیر کے وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر خان بھی میاں نوازشریف کی طرح یہی کہتے پھرتے نظر آئیں گے کہ مجھے کیوں نکالا ، ان خیالات کا اظہار ا ن پارٹی رہنماﺅں نے راولاکوٹ میں منعقدہ پریس کانفرنس کے دوران کیا ۔ اس موقع پر سابق ایڈمنسٹریٹر میونسپل کارپوریشن سردار ارشد نیازی ، سابق ضلعی صدر سردار عظیم خان ایڈووکیٹ، سابق مشیر سردار حمید افضل خان، سردار ببرک خان، سردار ریحان سلیم ، سردار ثاقب فاروق ، نوشین کنول ایڈووکیٹ، پیپلزپارٹی ، پی وائی او اور پی ایس ایف کے عہدیداران اور کارکنا ن کی کثیر تعداد موجود تھی ۔ان رہنماﺅں نے کہاکہ پیپلزپارٹی نے اپنے دور میں آزادکشمیر میں فنڈز کی کمی کے باوجود تین میڈیکل کالجز اور پانچ یونیورسٹیز کا قیام عمل میں لایا سڑکوں کی تعمیر کیلئے عملی اقدامات کیے گئے ایکسپر یس وے ، راولاکوٹ گوئیں نالہ آزاد پتن روڈ اور ایشئین ڈویلپمنٹ بینک کے تعاون سے دیگر سڑکوں کی تعمیر کیلئے عملی اقدامات کیے گئے لیکن پیپلزپارٹی کی حکومت ختم ہونے کے بعد تمام منصوبہ جات پر کام ٹھپ ہے ،۔اس وقت ایسا لگتا ہے کہ آزادکشمیر میں حکومت نام کی کوئی چیز نہیں ہے انہوں نے کہا کہ آزادکشمیر کے بزرگ سیاست دان سردار خان بہاد ر خان کی وفات سے حلقہ نمبر دو ہجیرہ کی نشست خالی ہوئی ہے اس وقت حکومت آزادکشمیر پورے لاﺅلشکر کے ساتھ حلقہ نمبر دو پر حملہ آور ہے خرید و فروخت کا سلسلہ جاری ہے جعلی اسکیموں کا اعلان کیاجارہا ہے حکومت کو اس وقت ہجیرہ کے عوام کی یاد آئی ہے جب ضمنی انتخابات ہونے جارہے ہیں دو سال تک کسی نے ہجیرہ کی عوام سے نہیں پوچھا کہ آپ کس حال میں ہیں انہوں نے کہاکہ حکومت کی طرف سے عوام کو دیئے گئے جھانسے اور لالچ کا نوٹس لیاجائے ۔پیپلزپارٹی کے ان رہنماﺅں نے کہاکہ حکومت آزادکشمیر کو اپنے انتخابی منشور اور اعلانا ت پر عمل در آمد کیلئے بہت وقت دیاگیا ہم نے سیاسی رواداری کا بھرپور مظاہرہ کیا لیکن گڈ گورننس کی دعوے دار حکومت دو سالوں میں کچھ بھی نہیں کر سکی موجودہ حکومت عوامی مسائل کے حل اور تعمیر وترقی کیلئے  اقدامات کرنے میں بری طرح ناکام رہی ہے بالخصوص پونچھ دشمنی کا مظاہرہ کیاجارہا ہے جو مزید برداشت نہیں کیاجائے گا اگر حکومت نے اپنی روش تبدیل نہ کی ،منصوبہ جات پر کام شروع نہ کیاگیا تو حالات سنگین ہوں گے جس کی تمام تر ذمہ داری موجودہ حکمرانوں پر ہوگی