اتوار 17 فروری 2019ء
اتوار 17 فروری 2019ء

آزادکشمیر کے 500سیاحتی مقامات لیز پر دینے کا فیصلہ

  مظفرآباد(دھرتی نیوز) وزیراعظم آزادحکومت ریاست جموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان نے کہا ہے کہ اوورسیز کمیشن کو فعال اور متحرک ادارہ بنایا جائے گا تارکین وطن کے مسائل کے حل اور انہیں آزاد خطہ کے اندر سرمایہ کاری کے لیے معیاری سہولیات مہیا کی جائیں، آزادکشمیر کے اندر سرمایہ کاری سے متعلق نیا آرڈی نینس جاری کر دیا گیا ہے اس آرڈینینس کے تحت تارکین وطن اور سرمایہ کاروں کو ون ونڈو آپریشن کے تحت سہولیات مہیا کی جائیں گی،آرڈیننس مزید بہتری کیلئے اسمبلی بھی جائیگا اور وہاں سے منظور ہوگا۔ سرمایہ کاروں کو سیاحتی مقاصد کے لیے 40روز کے اندر متعلقہ اراضی الاٹ کی جائے گی ۔ اس آرڈیننس کے تحت آزاد کشمیر کے اندر سیاحت کے شعبہ میں انقلاب آئے گا۔ حکومت آزاد کشمیر نے سیاحت کے لئے جاندار پالیسی ترتیب دے رکھی ہے۔ اس پالیسی کے تحت آزاد کشمیر کے اندر 500سیاحتی مقامات کی نشاندہی کی گئی ہے۔ یہ مقامات سرمایہ کاروں کو سیاحتی مقاصد کے لیے لیز پر دیے جائیں گے اور لیز کا عمل چالیس روز کے اندر مکمل کیا جائے گا۔ لیز کا عمل باضابظہ بڈنگ پراسیس کے ذریعے ہو گا۔ پالیسی کے تحت سرمایہ کارلیز پر حاصل کردہ اراضی پر مقررہ مدت کے اندر کاروبار شروع کرے گا۔ اور جہاں تعمیرات ہونگی وہاں ماحول دوست تعمیرات اور شجر کاری و شجر پروری کو بھی یقینی بنایا جائے گا، آزاد کشمیر کے قدرتی حسن کا ہر قیمت پر تحفظ کیا جائے گا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے اورسیز کمیشن کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں وزراء حکومت چوہدری محمد سعید ،محترمہ نورین عارف ،سیکرٹری مالیات ،سیکرٹری صنعت و تجارت سمیت دیگر متعلقہ حکام نے شرکت کی۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ حکومت اوورسیز کمیشن کو ضرورت کے مطابق دفتری مکانیت اور عملہ مہیا کرے گی جہاں تارکین وطن کو ون ونڈو آپریشن کے تحت سہولیات مہیا کی جائیں گی اوورسیز کمشنر کا دفتر باوقار ہو اور دفتر میں جملہ سہولیات میسر ہوں۔ ازاں بعد وزیراعظم آزادکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان نے بورڈ آف انویسٹمنٹ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ انویسٹمنٹ پالیسی اور ٹورازم پالیسی کے تحت آزاد کشمیر کے اندر مقامی سطح پر روزگار کے مواقع پیدا ہونگے اور لوگوں کا معیار اندگی بلند ہو گا۔ پالیسی پر عملدآمد کی صورت میں آزاد خطہ کے اندر ترقی اور خوشحالی کے نئے دور کا آغاز ہو گا۔ وزیر اعظم آزاد کشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان نے کہا کہ غیر ملکی سیاحوں کے لیے این او سی کی شرط ختم کی جا رہی ہے جس سے آزاد کشمیر کے اندر بین الاقوامی سیاحت کو فروغ ملے گا۔ اور اس کے معیشت پر بھی مثبت اثرات مرتب ہونگے۔ بورڈ آف انویسٹمنٹ کے اجلاس میں چیئرمین انویسٹمنٹ بورڈ سردار نوید صادق سمیت متعلقہ حکام نے شرکت کی۔ آزادکشمیر کے 500سیاحتی مقامات لیز پر دینے کا فیصلہ  مظفرآباد(دھرتی نیوز) وزیراعظم آزادحکومت ریاست جموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان نے کہا ہے کہ اوورسیز کمیشن کو فعال اور متحرک ادارہ بنایا جائے گا تارکین وطن کے مسائل کے حل اور انہیں آزاد خطہ کے اندر سرمایہ کاری کے لیے معیاری سہولیات مہیا کی جائیں، آزادکشمیر کے اندر سرمایہ کاری سے متعلق نیا آرڈی نینس جاری کر دیا گیا ہے اس آرڈینینس کے تحت تارکین وطن اور سرمایہ کاروں کو ون ونڈو آپریشن کے تحت سہولیات مہیا کی جائیں گی،آرڈیننس مزید بہتری کیلئے اسمبلی بھی جائیگا اور وہاں سے منظور ہوگا۔ سرمایہ کاروں کو سیاحتی مقاصد کے لیے 40روز کے اندر متعلقہ اراضی الاٹ کی جائے گی ۔ اس آرڈیننس کے تحت آزاد کشمیر کے اندر سیاحت کے شعبہ میں انقلاب آئے گا۔ حکومت آزاد کشمیر نے سیاحت کے لئے جاندار پالیسی ترتیب دے رکھی ہے۔ اس پالیسی کے تحت آزاد کشمیر کے اندر 500سیاحتی مقامات کی نشاندہی کی گئی ہے۔ یہ مقامات سرمایہ کاروں کو سیاحتی مقاصد کے لیے لیز پر دیے جائیں گے اور لیز کا عمل چالیس روز کے اندر مکمل کیا جائے گا۔ لیز کا عمل باضابظہ بڈنگ پراسیس کے ذریعے ہو گا۔ پالیسی کے تحت سرمایہ کارلیز پر حاصل کردہ اراضی پر مقررہ مدت کے اندر کاروبار شروع کرے گا۔ اور جہاں تعمیرات ہونگی وہاں ماحول دوست تعمیرات اور شجر کاری و شجر پروری کو بھی یقینی بنایا جائے گا، آزاد کشمیر کے قدرتی حسن کا ہر قیمت پر تحفظ کیا جائے گا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے اورسیز کمیشن کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں وزراء حکومت چوہدری محمد سعید ،محترمہ نورین عارف ،سیکرٹری مالیات ،سیکرٹری صنعت و تجارت سمیت دیگر متعلقہ حکام نے شرکت کی۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ حکومت اوورسیز کمیشن کو ضرورت کے مطابق دفتری مکانیت اور عملہ مہیا کرے گی جہاں تارکین وطن کو ون ونڈو آپریشن کے تحت سہولیات مہیا کی جائیں گی اوورسیز کمشنر کا دفتر باوقار ہو اور دفتر میں جملہ سہولیات میسر ہوں۔ ازاں بعد وزیراعظم آزادکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان نے بورڈ آف انویسٹمنٹ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ انویسٹمنٹ پالیسی اور ٹورازم پالیسی کے تحت آزاد کشمیر کے اندر مقامی سطح پر روزگار کے مواقع پیدا ہونگے اور لوگوں کا معیار اندگی بلند ہو گا۔ پالیسی پر عملدآمد کی صورت میں آزاد خطہ کے اندر ترقی اور خوشحالی کے نئے دور کا آغاز ہو گا۔ وزیر اعظم آزاد کشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان نے کہا کہ غیر ملکی سیاحوں کے لیے این او سی کی شرط ختم کی جا رہی ہے جس سے آزاد کشمیر کے اندر بین الاقوامی سیاحت کو فروغ ملے گا۔ اور اس کے معیشت پر بھی مثبت اثرات مرتب ہونگے۔ بورڈ آف انویسٹمنٹ کے اجلاس میں چیئرمین انویسٹمنٹ بورڈ سردار نوید صادق سمیت متعلقہ حکام نے شرکت کی۔ آزادکشمیر کے 500سیاحتی مقامات لیز پر دینے کا فیصلہ  مظفرآباد(دھرتی نیوز) وزیراعظم آزادحکومت ریاست جموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان نے کہا ہے کہ اوورسیز کمیشن کو فعال اور متحرک ادارہ بنایا جائے گا تارکین وطن کے مسائل کے حل اور انہیں آزاد خطہ کے اندر سرمایہ کاری کے لیے معیاری سہولیات مہیا کی جائیں، آزادکشمیر کے اندر سرمایہ کاری سے متعلق نیا آرڈی نینس جاری کر دیا گیا ہے اس آرڈینینس کے تحت تارکین وطن اور سرمایہ کاروں کو ون ونڈو آپریشن کے تحت سہولیات مہیا کی جائیں گی،آرڈیننس مزید بہتری کیلئے اسمبلی بھی جائیگا اور وہاں سے منظور ہوگا۔ سرمایہ کاروں کو سیاحتی مقاصد کے لیے 40روز کے اندر متعلقہ اراضی الاٹ کی جائے گی ۔ اس آرڈیننس کے تحت آزاد کشمیر کے اندر سیاحت کے شعبہ میں انقلاب آئے گا۔ حکومت آزاد کشمیر نے سیاحت کے لئے جاندار پالیسی ترتیب دے رکھی ہے۔ اس پالیسی کے تحت آزاد کشمیر کے اندر 500سیاحتی مقامات کی نشاندہی کی گئی ہے۔ یہ مقامات سرمایہ کاروں کو سیاحتی مقاصد کے لیے لیز پر دیے جائیں گے اور لیز کا عمل چالیس روز کے اندر مکمل کیا جائے گا۔ لیز کا عمل باضابظہ بڈنگ پراسیس کے ذریعے ہو گا۔ پالیسی کے تحت سرمایہ کارلیز پر حاصل کردہ اراضی پر مقررہ مدت کے اندر کاروبار شروع کرے گا۔ اور جہاں تعمیرات ہونگی وہاں ماحول دوست تعمیرات اور شجر کاری و شجر پروری کو بھی یقینی بنایا جائے گا، آزاد کشمیر کے قدرتی حسن کا ہر قیمت پر تحفظ کیا جائے گا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے اورسیز کمیشن کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں وزراء حکومت چوہدری محمد سعید ،محترمہ نورین عارف ،سیکرٹری مالیات ،سیکرٹری صنعت و تجارت سمیت دیگر متعلقہ حکام نے شرکت کی۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ حکومت اوورسیز کمیشن کو ضرورت کے مطابق دفتری مکانیت اور عملہ مہیا کرے گی جہاں تارکین وطن کو ون ونڈو آپریشن کے تحت سہولیات مہیا کی جائیں گی اوورسیز کمشنر کا دفتر باوقار ہو اور دفتر میں جملہ سہولیات میسر ہوں۔ ازاں بعد وزیراعظم آزادکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان نے بورڈ آف انویسٹمنٹ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ انویسٹمنٹ پالیسی اور ٹورازم پالیسی کے تحت آزاد کشمیر کے اندر مقامی سطح پر روزگار کے مواقع پیدا ہونگے اور لوگوں کا معیار اندگی بلند ہو گا۔ پالیسی پر عملدآمد کی صورت میں آزاد خطہ کے اندر ترقی اور خوشحالی کے نئے دور کا آغاز ہو گا۔ وزیر اعظم آزاد کشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان نے کہا کہ غیر ملکی سیاحوں کے لیے این او سی کی شرط ختم کی جا رہی ہے جس سے آزاد کشمیر کے اندر بین الاقوامی سیاحت کو فروغ ملے گا۔ اور اس کے معیشت پر بھی مثبت اثرات مرتب ہونگے۔ بورڈ آف انویسٹمنٹ کے اجلاس میں چیئرمین انویسٹمنٹ بورڈ سردار نوید صادق سمیت متعلقہ حکام نے شرکت کی۔  

آج کااخبار

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

کالم