اتوار 26 جنوری 2020ء
اتوار 26 جنوری 2020ء

راولاکوٹ اور مظفراباد ائیرپورٹس بحال،آئندہ سال سے پرازیں شروع کرنے کا فیصلہ

راولاکوٹ (دھرتی نیوز)حکومت آزاد کشمیر کی تحریک پر پاکستان سول ایوی ایشن اتھارٹی(سی اے اے)نے آئندہ سال کے آغاز پر ٓازاد کشمیر کے دو ائیرپورٹس آپریشنل کر کے روزمرہ کی بنیاد پر پروازیں چلانے کی تیاری مکمل کر لی ہے۔راولاکوٹ اور مظفراباد ائیرپورٹس پر سی اے اے کا اضافی عملہ بھی تعینات کر دیا ہے جبکہ چند دن قبل ایک ٹیکنیکل ٹیم نے کمشنر پونچھ  ڈویژن کے ہمراہ راولاکوٹ ائیرپورٹ کا معائنہ کیا اور ان مشکلات کا بھی جائزہ لیا جو جن کا مستقبل میں سامنا رہ سکتا ہے۔راولاکوٹ ائیرپورٹ 1990میں پروازوں کے لیے کھول دیا گیا تھا اور پاکستان کی قومی ائیرلائن پی آئی اے نے چھو ٹے سائز کے جہاز چلانے شروع کیے تھے۔اکتوبر 2005 کے بعد یہ ائیرپورٹس پروازوں کے لیے بند کر دئیے گے تھے جس کی وجوہات پی ٓائی اے کا خسارہ بتایاگیا تھا۔بعد ازاں حکومت آزاد کشمیر مختلف اوقات میں ان پروازوں کی بحالی کا مطالبہ کرتی رہی ہے۔سال 2015 سی اے اے نے ان دنوں ائیرپورٹ کی بحالی اور اور اس کی تزئین و آرائش سمیت رن وے کی مرمتی کے لیے رقم مختص کی۔مظفرآباد ائیرپورٹ کے لیے 450 ملین جبکہ راولاکوٹ ائیرپورٹ کے لیے 259 ملین روپے مختص کیے گے تھے۔ابتداء میں یہ خیال تھا کہ ان ائیرپورٹس پر قدرے زائد نشتوں والے جہاز ATR چلائے جائیں گے لیکن ان دنوں ائیرپورٹس کے رن وے سائز کے اعتبار سے اس قابل نہیں کہ یہ جہاز لینڈ کر سکیں۔ATR جہازوں کو لینڈنگ کے لیے 5478 فٹ رن وے درکار ہوتا ہے جبکہ ان ائیر پورٹس کے رن وے کا سائز ساڑھے چار سو فٹ تک ہے اور توسیع کی گنجائش بھی بہت کم ہے لہذا فی الوقت  18 سے 20 نشتوں والے جہاز ہی چلائے جائیں گے۔ پاکستان سول ایوی ایشن اتھارٹی کے احکام کے مطابق ان دنوں ائیرپورٹس پر پروازوں کی بحالی کی تیاری مکمل ہے اور جلد پروازیں شروع کر دی جائیں گی۔اضافی عملہ بھی تعینات کر دیا گیا ہے جبکہ پی آئی اے کو بھی اپنے فیصلے سے آگاہ کر دیا ہے۔فضائی پر وازوں کی بحالی سے نہ صرف بہتر سفری سہولیات میسر آئیں گی بلکہ ان علاقوں میں سیاحت کو فروغ ملے گا کیونکہ وفاقی حکومت نے غیر ملکی سیاحوں کو ان علاقوں تک رسائی کے لیے پابندیوں سے جزوی طور پر مستثنیٰ قرار دے رکھا ہے۔  

آج کااخبار

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

کالم