هفته 15  اگست 2020ء
هفته 15  اگست 2020ء

راولاکوٹ،مارچ میں بیرون ممالک سے آنے والوں کے خلاف کریک ڈاؤن کا فیصلہ

راولاکوٹ (دھرتی نیوز) پاکستان کی امیگریشن سے وصول شدہ ریکارڈ کے مطابق پونچھ ڈویژن میں یکم مارچ 2020ء سے 25مارچ تک 2874افراد پونچھ ڈویژن کے مختلف علاقہ جات میں آئے ہیں یہ افراد دنیا کے ایک درجن سے زائد ممالک جہاں کورونا وائرس تیزی سے پھیل چکا تھا سے سفر کر کے اسلام آباد، لاہور اور پشاور کے ائیرپورٹس پر آئے اور وہاں سے پونچھ ڈویژن میں داخل ہوئے، امیگریشن حکام نے یہ ڈیٹا محکمہ داخلہ آزادکشمیر کی تحریک پر شیئر کیا ہے، ڈی آئی جی پونچھ ڈویژن راشد نعیم کے مطابق راولاکوٹ کی حدود میں یکم مارچ سے 20مارچ تک 1434افراد جبکہ 21سے 25مارچ تک 52افراد آئے، اس طرح ان کی کل تعداد 1486 بنتی ہے، ضلع باغ میں یکم سے 20مارچ تک 679 اور 21مارچ سے 25مارچ تک 16 افراد بیرون ممالک سے آئے، اس طرح ان کی کل تعداد 695بنتی ہے، ضلع سدھنوتی میں یکم مارچ سے 20مارچ تک 586جبکہ 21سے 25مارچ تک 22افراد بیرون ممالک سے آئے اس طرح ان کی کل تعداد 608بنتی ہے،ضلع حویلی میں یکم سے بیس مارچ تک 80جبکہ 21سے 25مارچ تک 5افراد بیرون ملک سے آئے ان کی کل تعداد 85بنتی ہے، ڈی آئی جی پونچھ نے کہا کہ امیگریشن حکام نے یہ ڈیٹا ہماری تحریک پر مہیا کیا ہے جس کے بعد اب متعلقہ تھانوں کے ذمہ داران کی ڈیوٹیاں لگائی گئی ہیں کہ وہ محکمہ صحت کے احکام کے ہمراہ ان لوگوں کے گھروں میں جا کر انہیں چیک کیا جائے، اور اگر کسی نے کورونا وائرس کی علامات پائی جاتی ہیں تو اسے قرنطینہ میں منتقل کیا جائے اور ان لوگوں کے سفر کی ہسٹری بھی مرتب کی جائے۔ دریں اثناء یکم مارچ سے اب تک پاکستان کے مختلف شہروں خصوصاً تبلیغی جماعت کے ہمراہ پونچھ ڈویژن میں آنے والوں کا ریکارڈ بھی مرتب کیا جا رہا ہے اور انہیں بھی اسی طرح سے چیک کیا جائیگا، انہوں نے کہا ہے کہ آنے والے دنوں میں لاک ڈاؤن میں مزید سختی لائی جائے گی، چونکہ اتنی بڑی تعداد میں بیرون ملک سے سفر کر کے آنے والوں کے باعث کورونا وائرس کے پھیلنے کے امکانات زیادہ ہیں۔  

آج کااخبار

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

کالم