پیر 18 اکتوبر 2021ء
پیر 18 اکتوبر 2021ء

تنویر الیاس نے ن لیگ کو سینٹ کا ٹکٹ دینے کے عوض 50 کروڑ کی آفر کی تھی،مریم نواز

فاروڈ کہوٹہ (دھرتی نیوز) پاکستان مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز شریف نے الزام لگایا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار تنویر الیاس خان نے ایک سرکاری محکمے کے افسر کو ایک ارب روپے کی رشوت دی ہے۔ مذکورہ افسر کو نوکری سے ہٹایا گیا ہے تاہم جس نے رشوت دی وہ وزیراعظم عمران خان کے ساتھ سٹیج پر موجود ہوتا ہے۔ فاروڈ کہوٹہ کے حلقے میں مسلم لیگ (ن) کے امیدوار چوہدری عزیز کے انتخابی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے مریم نوازشریف نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے اپنی نئی اے ٹی ایم مشین کے لئے باغ میں جلسہ کیا۔ وزیراعظم عمران خان کو بتانا چاہئے کہ عمران خان نے اس نئی اے ٹی ایم مشین سے کشمیریوں کے ووٹ کتنے میں خریدے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تنویر الیاس خان کو ایک سال پہلے تک کوئی جانتا نہیں تھا۔ تنویر الیاس خان نے وزیراعظم نوازشریف کو پیغام پہنچایا تھا کہ میں مسلم لیگ (ن) کے فنڈ میں 50 کروڑ روپے دیتا ہوں مجھے سینیٹ میں پارٹی ٹکٹ دیا جائے۔ میاں نواز شریف نے جواب میں کہا تھا کہ میں پارٹی ٹکٹ دیتا ہوں بیچتا نہیں ہوں۔ مریم نوازشریف نے کہا کہ بدقسمتی سے جس نے رشوت لی اسے ہٹا دیا گیا اور جس نے رشوت دی وہ عمران خان کے ساتھ سٹیج پر موجود ہوتا ہے۔ مسلم لیگ (ن) کی رہنما نے کہا کہ یہ فیصلہ ہو گیا ہے کہ آزادکشمیر کو صوبہ بنایا جائے گا۔ اسی لئے آزادکشمیر کے الیکشن کو چوری کر کے ایک کٹھ پتلی وزیراعظم لایا جائے گا۔ آزادکشمیر کی پہچان اور تشخص چھین لیا جائے گا،مریم نواز نے کہا کہ سلیکٹڈ کی طرح آزاد کشمیر کو مودی کے حوالے نہیں کریں گے۔مریم نواز نے کہا کہ میں ایسی جگہ پر کھڑی ہوں جس کے 3 اطراف میں ایل او سی (لائن آف کنٹرول) ہے تو میں سب سے پہلے مقبوضہ کشمیر جو ایل او سی کے اس پار ہے، میں مقبوضہ کشمیر کے شہید بیٹوں، ان کی ماں، والدینکو سلام پیش کرتی ہوں، اور یہ کہنا چاہتی ہوں کہ آپ کی قربانیاں کبھی رائیگاں نہیں جائیں گی۔انہوں نے کہا کہ وہ ایک لاکھ شہدا جنہوں نے اپنی سرزمین کی آزادی کے لیے اپنا خون بہایا ہے، مریم نواز یہاں کھڑے ہوکر وعدہ کرتی ہے کہ نواز شریف اور آزاد کشمیر میں کھڑے لوگ آپ کا مقدمہ لڑیں گے، نہ صرف یہ مقدمہ لڑیں گے بلکہ سلیکٹڈ کی طرح کشمیر کو مودی کے حوالے نہیں کریں گے۔مریم نواز نے کہا کہ نواز شریف کشمیر کا مقدمہ لڑے گا بھی اور جیتے گا بھی، نواز شریف جب کشمیریوں کے وکیل تھے تو برہان وانی شہید کا مقدمہ ایک شیر کی طرح امریکا میں سلامتی کونسل میں لڑا تھا، نواز شریف جیسا شیر تھا تو دشمن کے 5 ایٹمی دھماکوں کے جواب میں 6 ایٹمی دھماکے کیے تھے۔انہوں نے کہا کہ نواز شریف نے منہ لٹکا کر کشمیریوں کو یہ نہیں کہا کہ اگر بھارت کشمیر اچک کر لے گیا تو میں کیا کرسکتا ہوں، نواز شریف نے سر پھینک کر یہ نہیں کہا کہ 2 منٹ کی خاموشی اختیار کی جائے، مقبوضہ کشمیر کا یہ مقدمہ صرف آزاد کشمیر کے شیر اور شیرنیاں ہی لڑسکتے ہیں۔  

آج کااخبار

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

کالم