پیر 18 اکتوبر 2021ء
پیر 18 اکتوبر 2021ء

کٹ پتلی وزیر اعظم عمران خان کشمیر کا سفیر نہیں ہو سکتا،بلاول بھٹو زرداری

باغ (محمود راتھر سے)چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے پیپلز پارٹی کے جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ کٹ پتلی وزیر اعظم عمران خان جو مودی کی کامیابی کے لیے دعا کرتا رہا ہے وہ کشمیر کا سفیر نہیں ہو سکتا،کشمیر کا فیصلہ کشمیریوں کی مرضی کے بغیر دنیا کی کوئی طاقت نہیں کر سکتی ہے،ہم کشمیریوں کے حکمکے منتظر ہیں اگر وہ چاہتے ہیں کہ جنگ ہو تو جنگ کریں گے اگر وہ کہتے ہیں کہ امن ہو تو امن کریں گے لیکن کشمیریوں کی مرضی کے بغیر کوئی فیصلہ ہر گرز مسلط نہیں کریں گے،پیپلز پارٹی کے جیالے پاکستان وآزاد کشمیر میں موجود ہوں تو کشمیریوں کے اوپر کوئی فیصلہ کشمیریوں کی مرضی کے بغیر نہیں ہو گا،ہم کسی کو کشمیریوں کے حقوق پر کسی کو ڈاکہ نہیں ڈالنے دیں گے،ہم کٹ پتلی وزیر اعظم کو ہر گز اجازت نہیں دیں گے کہ وہ کشمیریوں کے حقوق پر ڈاکہ ڈالیں،قائد عوام نے یہ نعرہ دیا تھا کہ ہمارا نعرہ سب سے بھاری رائے شماری رائے شماری،پیپلز پارٹی کا کارکن کٹ تو سکتا ہے جھک نہیں سکتا ہے،باغ کے عوام مشکور ہوں کہ انہوں نے شاندار استقبال کر کے میرا دل باغ باغ کردیا ہے ان کا خلوص پیار محبت ساری زندگی نہیں بھول سکتاہوں،باغ نوجوانوں نے شہید محترمہ بے نظیر بھٹو کے استقبال میں شہید ہونے والوں کو خراج عقیدت پیش کرتا ہوں،انہوں نے کہا کہ آزاد کشمیر میں مسلم لیگ ن کی حکومت رہی ہے اس نے کوئی کام نہیں کیے جبکہ سابقہ دور کے پیپلز پارٹی کے کام ہی نظر آرہے ہیں باغ میں یہ حکومت کوئی میگا پراجیکٹ نہیں دے سکی ہماری حکومت بنی تو میں باغ کے لیے دل کا ہسپتال بنا کر تحفہ کے طور پر دوں گا جہاں غریبوں کا مفت اعلاج کیا جائے گا،ہم نے پاکستان کے اندر پنشن  اور تنخواؤں میں سو فیصداضافہ کیا جبکہ موجودہ حکومت نے صرف دس فیصد اضافہ اور مہنگائی کئی سو گناہ اضافہ کردیا گیا ہے آج پاکستان وآزاد کشمیر میں غریب عوام روٹی کے نوالے کے لیے ترس گئے ہیں،آزاد کشمیر میں اس نااہل حکومت کے اثرات پڑنے سے روکا جائے25جولائی پیپلز پارٹی کی فتح ہوگی اور آزاد کشمیر میں ہم حکومت بنائیں گے جہاں آزاد کشمیر میں مثالی ترقی ہوگی اور عوامی مسائل بھی حل ہو ں گئے،انہوں نے کہا کہ ایک گندا وزیر جو آزاد کشمیر میں نفرت پھیلانے کے لیے آیا اور کشمیر یوں نے اس کااستقبال جوتوں سے کیا انہیں شرم آنی چائے،شہید زوالفقار علی بھٹونے 90ہزار فوجیوں کو واپس لایا اور کشمیر پر دو ٹوک موقف پیش کیا،پاکستان میں بھٹو کا دیا ہوا آئین ہی ہماری پہچان ہے،شہید بھٹو نے کبھی غیرت پر کوئی سودے بازی نہیں کی،وہ جھکا نہیں بلکہ اپنی جان جانے آفیرن کے سپرد کر دی ہے،جلسہ عام سے سابق وزیر اعظم پاکستان راجہ پرویز اشرف،سابق سنیئر وزیر آزاد کشمیر سردار قمرالزمان خان،سردار ضیاء القمر،سردار خالد چغتائی،سردار زرین خان،راجہ خاور قیوم اور دیگر نے خطاب کیا۔سابق وزیر اعظم پاکستان راجہ پرویز اشرف نے جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ باغ شہیدوں غازیوں کی سرزمین ہے باغ سے ہمارا کوئی کارکن لوٹا نہیں بنا جبکہ پی ٹی آئی کی جماعت لوٹوں سے بنی ہوئی ہے پاکستان میں عمران خان کی حکومت ناکام ترین ثابت ہوئی ہے اللہ کرے کہ اس کے حواریوں کی یہاں حکومت نہ بنے جو پاکستان میں کوئی ترقی نہ کر سکے غریب عوام روٹی کے نوالے کو ترس رہے ہیں،کشمیر کے مقدر کا فیصلہ کشمیریوں نے کرنا ہے کسی ڈکٹیٹر کا فیصلہ ہر گز قبول نہیں کریں گے،

آج کااخبار

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

کالم