منگل 25 جنوری 2022ء
منگل 25 جنوری 2022ء

یونین کونسلز کی تشکیل نو،کئی یونین کونسلز دوسری میں ضم،کارپوریشن کی وارڈ زمیں کمی

راولاکوٹ (دھرتی نیوز) آزادکشمیر میں رواں سال کے وسط میں ہونے والے بلدیاتی انتخابات کیلئے الیکشن کمیشن آف آزاد جموں و کشمیر کی طرف سے یونین کونسلوں اور وارڈ بندیوں کے از سر نو تعین کیلئے مقرر کی گئی مدت 5جنوری کو ختم ہو گئی ہے، آج آزادکشمیر بھر کے ڈپٹی کمشنر آفس کے سامنے یونین کونسلز اور وارڈ بندیوں سے متعلق فہرستیں آویزاں کر دی جائیں گی، ابتدائی اطلاعات کے مطابق کئی اضلاع میں یونین کونسلز کی مجموعی تعداد پہلے سے کم کر دی گئی ہیں جبکہ کچھ سب ڈویژنز میں یونین کونسلز کی تعداد بڑھا دی گئی ہے، الیکشن کمیشن نے سپریم کورٹ آف آزاد جموں و کشمیر کے فیصلے کی روشنی میں یونین کونسل کی آبادی دس سے پندرہ ہزار مختص کر رکھی ہے جبکہ میونسپل کارپوریشن میں یہ تعداد کسی بھی وارڈ کیلئے پینتیس سو سے پانچ ہزار مقرر کی گئی ہے، عدالتی حکم نامہ کے تحت یونین کونسلوں کی آبادی کا تعین 2017ء میں کی گئی مردم شماری کے تحت کیا جا رہا ہے جس کی وجہ سے عوام کے اندر ایک ابہام پایا جاتا ہے چونکہ کہیں جگہوں پہ 2021 ء میں ہونے والے الیکشن میں ووٹروں کی تعداد جو نادرہ کے تعاون سے ترتیب دی گئی تھیں 2017ء میں کی جانے والی مردم شماری میں درج آبادی سے زیادہ ہے، دریں اثناء ضلع پونچھ میں سب عباسپور میں جہاں یونین کونسل پہلے تین تھیں اب ان کی تعداد چار کر دی گئی ہے جن میں چھاترہ، کھلی درمن، چفاڑ، ٹنگیڑاں شامل ہیں، اس طرح بنجونسہ، حسین کوٹ کو یکجا کر کے ایک یونین کونسل بنائی گئی ہے جس کا نام بنجونسہ حسین کوٹ یونین کونسل ہی ہو گا جبکہ جنڈالی، چھوٹا گلہ، دوتھان دوسری یونین کونسل ہو گی، اس طرح پکھر اور علی سوجل یونین کونسل میں کوئی تبدیلی نہیں ہوئی ہے جبکہ تھوراڑ اور ٹائیں دو یونین کونسلیں بنائیں گئی ہیں، ہورنہ میرہ، پاچھیوٹ اور ہجیرہ کی یونین کونسلز سے متعلق فیصلہ آج کیا جائیگا، میونسپل کارپوریشن راولاکوٹ جس کی آبادی 69400 ظاہر کی گئی ہے قبل ازیں اس کی 21وارڈز تھیں جو کہ اب کم کر کے 19 وارڈز بنائی گئی ہیں، ڈپٹی کمشنر کے مطابق ان یونین کونسلز سے متعلق اعتراضات کی سماعت 9جنوری تک کی جائے گی جس کے بعد حتمی فہرست جاری کر دی جائے گی۔   

آج کااخبار

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

کالم