جمعرات 13 دسمبر 2018ء
جمعرات 13 دسمبر 2018ء

جامعات میں سیرت چیئرزکی تکمیل مشکلات کا شکار

اسلام آباد(صباح نیوز)یونیورسٹوں میںانتہاپسندی اوردہشتگردی کی روک تھام کے لیے قائم کی گئی سیرت چیئرز پر سربراہوں کی تعیناتی کے لیے سٹیئرنگ کمیٹی کا اجلاس اس ہفتہ ہوگا،4سال گزرنے کے باوجود9سیرت چیئرز میںسے ایک پربھی تعیناتی نہیںہوئی،سیرت چیئرز پرتعیناتی کے لیے دومرتبہ اشتہاردیئے گئے پہلی بار موزوں امیدوارنہ ملے دوسرے مرتبہ47امیدواروں کی درخواستیں موصول ہوئیںجن میں سے 24امیدواروں کے انٹرویو10جولائی 2017کوہوچکے ہیں ۔دستیاب دستاویزات کے مطابق ملک بھر میں جاری دہشت گردی اور شدت پسندی کے واقعات کی تعلیمی اداروں میں روک تھام کے لئے یونیورسٹیوں میں قائم سیرت چیئرز اپنے قیام کے چار سال بعد بھی سربراہوں سے محروم ہیں۔ چار سال گزرنے کے باوجود سیرت چیئرز پر ایک بھی تعیناتی نہیں ہو سکی۔ 2014 میں یونیورسٹیوں میں 9 سیرت چیئرز قائم کرنے کا فیصلہ کیا گیا تھا تاہم ان میں سے کسی ایک پر بھی تعیناتی کا عمل مکمل نہ ہو سکا۔ سیرت چیئر قائم کرنے کا فیصلہ 2014 میں سنٹرل ڈویلپمنٹ ورکنگ پارٹی کے اجلاس میں کیا گیا تھا جس کے لئے ابتدائی تخمینہ 18 ارب 99کروڑ 80 ہزار روپے لگایا گیا تھا۔ بعد میں مئی 2016 میں دوبارہ اجلاس کے دوران اسے بڑھا کر 41 ارب 80 کروڑ کر دیا گیاہر چیئر کے لیے 2کروڑ فیڈ مختص کیاگیاتھا۔ سیرت چیئر کا مقصد جامعات میں بین المذاہب ہم آہنگی، شدت پسندی کا خاتمہ، سماجی انصاف، انسانی حقوق، صنفی تعلیمات و دیگر مسائل کو اجاگر کرنا تھا۔ ان چیئرز پر دینی علم کے حامل مذہبی سکالرز کو تعینات کیا جانا تھا تاہم مذکورہ چیئرز پر کسی سربراہ کو تعینات نہیں کیا جا سکا۔ پشاور یونیورسٹی میںصرف ایک چیئر پر اسلامی نظریاتی کونسل کے سربراہ ڈاکٹر قبلہ ایاز کو تعینات کیا گیا تھا مگر ان کیاسلامی نظریاتی کونسل کے چیئرمین بننے کے بعد وہ چیئر بھی اب خالی ہے۔ ذرائع کاکہناہے کہ 17 جنوری 2016 کو سیرت چیئرز کے لئے اخبار میں اشتہار دیا گیا تھا مگر کوئی بھی موزوں امیدوار نہیں مل سکا ۔ جس کے بعد دوبارہ سٹیئرنگ کمیٹی نے ہدایت دی کہ اشتہارجاری کیاجائے جس پر 9 اکتوبر 2016 کو دوبارہ اشتہار شائع کیا گیا جس پر 47 امیدواروں نے درخواست جمع کرائی جن میں سے 24 امیدواروں کو منتخب کیا گیا اور ان امیدواروں کے نام سٹیئرنگ کمیٹی کے 18 مئی 2017 میں ہونے والے اجلاس میں دیئے گئے۔ جولائی 10 اور 11 ، 2017 کو ان کے باقاعدہ انٹرویو کئے گئے اور ان میں سے تین امیدواروں کو منتخب کرلیا گیا مگر منتخب ہونے والے امیدواروں نے ذاتی مسائل کی وجہ سے فورا جوائننگ نہیں دی ۔تین چیئرز کے لیے منتخب ہونے والے امیدواروں میںڈاکٹر شاہدہ پروین ،صنفی تعلیم اورخواتین کے حقوق پنجاب یونیورسٹی سے لاہورسے،ڈاکٹر محمدالیاس عالمی امن بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی اورڈاکٹرمحمداشرف انسانی حقوق اورسوشل سائنس یونیورسٹی آف لاہور سے ہیں .سیرت چیئرز پر سربراہوں کی تعیناتی کے لیے سٹیئرنگ کمیٹی کا اجلاس اس ہفتہ ہوگاجس میں سربراہوں کی تعیناتی کے حوالے سے حتمی فیصلہ کیا جائے گا۔

آج کااخبار

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

کالم