بدھ 16 جون 2021ء
بدھ 16 جون 2021ء

راولاکوٹ سے سوتیلی ماں کا سلوک نہیں ہونے دیں گے،عابد حسین عابد

راولاکوٹ (دھرتی نیوز)سابق وزیر اطلاعات آزاد کشمیر سردار عابد حسین عابد نے کہا ہیکہ حق نمائندگی کا دعویٰ کرنے والے اور حکمران خاموش بیٹھے ہیں۔ راولاکوٹ کی نسلوں کا سودا ہو رہاہے۔ یہاں سے تمام پراجیکٹس و آسامیوں کی منتقلی کی جارہی ہے۔ پاکستان پیپلزپارٹی نے ہمیشہ راولاکوٹ کی عوام کے حقوق کا خیال رکھا اور انشاء اللہ آئندہ انتخابات میں کامیاب ہو کر جو جو بھی زیادتیاں ہوئی ہیں ان کا بھرپور حساب لیا جائے گا۔ ان خیالات کا اظہارانہوں نے گزشتہ روز یہاں کھڑک پڑ کے مقام پر منعقدہ ایک تقریب سے خطاب کر تے ہوئے کیا۔ اس پروگرام کی صدارت سٹی صدر پاکستان پیپلزپارٹی آزاد کشمیر سردار آبشار کفائیت نے کی جبکہ پروگرام سے جنرل سیکرٹری پاکستان پیپلزپارٹی تحصیل راولاکوٹ سردار آصف اعظم، کھڑک کے سیاسی و سماجی رہنما سردار صیاد خان، سردار سجاد خان، واجد علی سمیت دیگر نے بھی خطاب کیا۔ عوام کو خاموش نہیں بیٹھنا چاہیے اور جہاں جہاں انہوں نے ووٹ دیئے ہیں ان لوگوں سے بھی بھرپور حساب لینا چاہیے کہ ووٹ لینے والوں نے عوام کے حقوق کا کتنا تحفظ کیا ہے۔ گزشتہ پانچ سال میں بیروزگاری میں کمی کے بجائے حد درجہ اضافہ ہوا۔ ترقیاتی کام ہونے کے بجائے ان کاموں کے لئے مختص کیئے جانے والے پیسے دوسرے اضلاع میں منتقل کیئے گئے ہیں۔ ہمارے ادارے یہاں سے منتقل ہو رہے ہیں اور ان معاملات اور مسائل پر صرف پیپلزپارٹی ہی جنگ لڑ سکتی ہے۔ پاکستان پیپلزپارٹی کی طرف سے آئندہ انتخابات میں بھرپور حصہ لوں گا۔ حلقہ کے لوگوں اور نوجوانوں سے اپیل ہیکہ میرے ماضی کو سامنے رکھتے ہوئے چالیس سالہ سیاسی جدوجہد کو دیکھتے ہوئے میرا ساتھ دیں۔ یہ نوشتہ دیوار بھی ہے اور سب لوگوں کو بھی اس کا علم ہے کہ میں نے ذاتی طور پر بڑی جدوجہد اور کٹھن سے نیا حلقہ بنوایا ہے اوراس حلقہ کوبنانے میں میری طویل جدوجہد شامل ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس نئے حلقہ میں مجھے قوی امیدہیکہ راولاکوٹ کے لوگ اور اہلیان کھڑک میرا بھرپور ساتھ دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ راولاکوٹ آزاد کشمیر کی وہ جگہ ہے جہاں سے ہوکر پورے آزاد کشمیر پر حکمرانی کی جاتی تھی اور لیڈ کیا جاتا ہے مگر آج راولاکوٹ کی حالت یہ ہے کہ ہر جگہ یتیموں والی پوزیشن بن گئی ہے۔ اس پوزیشن کو دور کرنے کے لئے لوگ میرا ساتھ دیں۔ انہوں نے کہا کہ میں ہر صورت انتخابات میں حصہ لوں گا اور بھرپور قوت سے کامیابی حاصل کروں گا۔ اپنے تابناک اور زبردست ماضی کو سامنے رکھتے ہوئے مجھے امید ہے کہ لوگ میرا بھرپور ساتھ دیں گے اور جو لوگ صرف ووٹ کے حصول کی حد تک ہی عوام کے پاس آتے ہیں اس کے بعد ان کی رسید بھی نہیں ملتی ان کی بھرپور حوصلہ شکنی کی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ آج کشمیری حالت جنگ میں ہیں۔ بھارتی فوج اور مودی کے عزائم کی وجہ سے انہیں شدید مشکلات درپیش ہیں۔ان کی تعلیم، وسائل اور الغرض ہرشعبہ زندگی میں ہی ان کا بری طرح استحصال کیا جارہا ہے۔ شہداء کی تعداد میں لاکھوں میں پہنچ گئی مگر حکومت آزاد کشمیر سمیت تمام پالیسی ساز ادارے محض خاموش تماشائی کا کردار ادا کر رہے ہیں۔ مہنگائی آسمان سے باتیں کر رہی ہے، تحریک آزادی کشمیر کی پیٹھ میں چھرا گھونپنے والی وفاقی حکومت جس نے بین الاقوامی اسٹیبلشمنٹ سے مل کر کشمیر کا سودا کر دیا ہے۔ گلگت بلتستان کو صوبہ بنایا جارہا ہے اور آزاد کشمیر کے حصے بھی بخرے کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ آزاد کشمیر کی اعلیٰ عدالتیں اس وقت ایک بحرانی کیفیت کا شکار ہیں۔ نہ سپریم کورٹ میں مستقل چیف جسٹس ہیں اور نہ ہی ہائی کورٹ میں مستقل چیف جسٹس ہیں مگر حکومت کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگ رہی ہے اور کسی بڑے منصوبے کے تحت آزاد کشمیر میں عدالتی بحران پیدا کر دیا گیا ہے اور اس کے خاتمہ کیلئے وکلاء، سول سوسائٹی سمیت عوام اپنا بھرپور کردار ادا کریں۔ اس موقع پر لوگوں نے سردار عابد حسین عابد کو اپنی بھرپور حمایت کا یقین بھی دلایا اور دوسری جماعتوں سے کئی افراد نے اپنے ساتھیوں اور خاندانوں سمیت مستعفی ہوتے ہوئے سردار عابد حسین عابد کی قیادت میں جماعت میں شمولیت بھی اختیا ر کی۔   

آج کااخبار

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

کالم