منگل 15 جون 2021ء
منگل 15 جون 2021ء

جونیئرآفسرکو آئی جی پولیس تعینات کرنے پر پولیس کے تین سنیئر آفیسرز کا کام کرنے سے انکار

مظفراباد (دھرتی نیوز)آزادکشمیر پولیس کے تین اعلی آفیسرز نے وفاقی حکومت کی جانب سے ایک جونیئر افسر کو  انسپکٹر جنرل پولیس (آئی جی پی) آزاد کشمیر تعینات کرنے پر تین ماہ کی استحقاقی رخصت کی درخواست دے دی۔ان تین اعلی آفیسرز میں گریڈ22  کے ایڈیشنل آئی جی پی فہیم عباسی، گریڈ 21 کے ڈی آئی جی پولیس طاہر قریشی اور یاسین قریشی شامل ہیں۔منگل کو کیبنٹ ڈویژن کی طرف سے گریڈ 20 کے افسر سہیل حبیب تاجک جو کے محکمہ انٹیلی جنس (آئی بی) میں خدمات سرانجام دے رہے تھے کو آزادکشمیر پولیس کا سربراہ تعینات کر دیا تھا۔. آزادکشمیر پولیس کے تین اعلی افسران کی تین ماہ کی چھٹی کی درخواست منظور ہونے یا نہ ہونے کا ابھی کوئی فیصلہ نہیں ہوا کیونکہ سابق آئی جی صلاح الدین معسود پہلے ہی چارج چھوڑ چکے تھے جبکہ نئے تعینات ہونے والے آئی جی نے ابھی تک چارج نہیں لیا ہے۔واضع رہے کہ آزاد کشمیر میں وفاقی حکومت نے چند دن قبل ہی چیف سیکرٹری گریڈ اکیس کے آفسر کو تعینات کیا ہے جبکہ آزاد کشمیر کی بیوروکریسی جو مذکورہ چیف سیکرٹری کے ما تحت کام ر رہی ہے میں ایڈیشنل چیف سیکرٹری،سنیئر ممبر بورڈ آف ریونیو،سیکرٹری سروسز اور پرنسپل سیکرٹری گریڈ بائیس میں  تعینات ہیں۔آزادکشمیر میں آئندہ ماہ  قانون ساز اسمبلی کے انتخابات ہونے جا رہے ہیں اور ماضی کی روایات کے تحت وفاق الیکشن سے پہلے اپنے مرضی کے لینٹ آفیسرزتعینات کرنا چاہتا ہے لیکن اس سارے پراسیس میں قواعد کو نظر انداز کیا گیا ہے اور نہ ہی آزاد کشمیر حکومت کو اعتماد میں لیا گیا ہے۔آزاد کشمیر پولیس کے چھوٹے درجے کے ملازمین پہلے ہی تنخواہوں میں امتیاز برننے پر احتجاج کر رہے ہیں اور اس دوران گریڈ اکیس اور بائیس کے  تین آفیسران کی جانب سے  چھٹی پر چلے جانے سے انتخابی عمل کے دوران امن و امان برقرار رکھنا مشکل کام ہو گا۔  

آج کااخبار

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

کالم