تازہ خبریں

Roznama Dharti FB Banner

راولاکوٹ ( سٹاف رپورٹر) سابق وزیر اعظم آزاد کشمیر ،صدر آل جموں کشمیرمسلم کانفرنس سردار عتیق احمد خان نے کہا ہے کہ انتخابات ہارنا یا جیتنا کوئی اہمیت نہیں رکھتا ،مسلم کانفرنس ایک نظریے اور سوچ کا نام ہے، آزاد کشمیر میں انتخابات وقت سے پہلے ہو سکتے ہیں ،غیر ریاستی سیاست نے بہت کچھ بدل دیا ہے ،کشمیریوں نے کبھی سرنڈر نہیں کیا اور اپنی عظیم تاریخ کو نہیں چھوڑا مسلم کانفرنس کا ماضی ،حال اور مستقبل روشن ہے میرپور الیکشن میں وزیر اعظم پاکستان میاں نواز شریف کا امیدوار بھاگ گیا اور زرداری کا امیدوار ہار گیا، نیا پاکستان بنانیوالے عمران خان کشمیر کے حدود اربع سے ہی واقف نہیں ،نظریہ اور کردار نہ ہو تو معاشرے اور جماعتیں زندہ نہیں رہتیں ،سری نگر میں پاکستان کا جھنڈالگ رہا ہے اور یہاں غازی ملت سردار ابراہیم ،سردار عبدالقیوم خان ،اور پاکستان کو گالیاں دیکر لوگ خوش ہو رہے ہیں ۔ان خیالات کا اظہا ر انہوں نے راولاکوٹ حلقہ تین کے نو منتحب عہدیداران کی حلف کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔حلف کی تقریب سے قبل حسین شہید کالج راولاکوٹ سے ایم ایس ایف اور یوتھ کے زیر اہتمام کشمیر بنے گا پاکستان ،ریلی نکالی گئی جسکی قیادت سردار عتیق احمد خان ،سیاب خالد ،صغیر چغتائی ،ارشاد خان ،خواجہ جاوید،اظہر نذراور مسلم کانفرنس کے دیگر رہنماوں نے کیا ۔ اس سے پہلے جب صدر مسلم کانفرنس سردار عیتق احمد خان ریلی میں شرکت کے لیے آئے تو ٹرانسپورٹ ورکرز یونین کے سپریم ہیڈ سردار محمد ارشدخان نے ٹرانسپورٹروں کے ہمراہ ڈھول کی تھاپ پران کا استقبا ل کیا۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سردار عتیق احمد خان نے کہا کہ گلگت بلتستان کو صوبہ بنانے کے لیے آزاد کشمیر میں ن لیگ بنائی گئی نواز شریف اور زرداری میثاق جمہوریت کی آڑ میں تقسیم کشمیر کے ایجنڈے پر کام کر رہے ہیں قائد اعظم نے مسلم کانفرنس کو ہی مسلم لیگ قرار دیا تھا میر پور الیکشن میں تین غیر ریاستی جماعتوں میں سے دو کا تو جنازہ نکل گیا آئندہ الیکشن میں آزاد کشمیر کی عوام تیسرے غیر ریاستی جماعت کا بھی جنازہ اٹھائیں گے ہندوستان نواز شریف ،زرداری ،اور عمران خان کو پاکستان نہیں سمجھتا بلکہ فوج اور راحیل شریف کو پاکستان سمجھتا ہے وزیر اعظم آزاد کشمیر اور صدر آزاد کشمیر کشمیر بنے گا پاکستان ،والوں کے ساتھ بھی سمجھوتہ کر سکتے ہیں سعودی عر ب کا دفاع ہماری زمہ داری ہے پارلیمنٹ کی متفقہ قرار دار کی توہین نواز حکومت نے کی خارجہ پالیسی اور داخلہ پالیسی اس حکومت کی مکمل ناکام ہے آزاد کشمیر کی موجودہ حکومت نے سارے جنگل کاٹ کر پیسے لاڑکانہ بھیجنے شروع کر رکھے ہیں گلگت بلتستان ،کشمیر کا حصہ ہے اور صوبہ بنانے کی ہر صورت مخالفت کریں گے پرویز مشرف کی تجاویز میں تقسیم کشمیر کی بات نہیں کی گئی بلکہ ان تجاویز میں وحدت کشمیر کی بحالی کی بات کی گئی تھی مقبوضہ کشمیر کے عوام نے ہندوستانی طالبان کے نمائندہ مودی کو ناکام کر دیا عربوں روپے خرچ کرنے کے باوجود مودی کی غیر ریاستی جماعت مقبوضہ کشمیر میں ناکام ہوئی لیکن یہاں کچھ لوگ رائیونڈ بنی گالہ اور لاڑکانہ میں حاضری دیکر خوشی محسوس کرتے ہیں جو باعث شرم ہے تقریب سے سابق سپیکر اسمبلی سردار سیاب خالد ممبر کشمیر کونسل صغیر چغتائی ،سردار ارشاد خان ،خواجہ جاوید،اظہر نذر ، سردار طاہر اکرم خان ایڈوکیٹ، ،ثوبیہ عمران نور ،سردار نذیر خان ،حامد ہاشمی ،سردار لیاقت خان ،سردار اشفاق ،ارشد خان ،نواز عباسی ،عبدالرحمن ،سردار سرور خان ،کنول خان ایڈوکیٹ ،سائرہ ایڈوکیٹ ،طاہر سلطان ،امجد نسیم ، نشاط اکبر ،راجہ عبدالجبار ،قاری عبدالروف ،سردار کمال خان ایڈوکیٹ ،سردار امیر خان ،مظہر چغتائی ،آزاد خان ،قاضی عبدالواحد ،فہد خان ،اظہر علی شاہ ،اخلاق نذیر ،سردار ساجد رزاق ،سردار صہیب کمال ،جنید حید ،انیس صابر،سبحان نیاز ،اور دیگر نے بھی خطاب کیا ۔


مظفرآباد ( بیورو رپورٹ ) ایک متنازعہ پریس کانفرنس کرنے کے الزام میں معطل کئے جانے والے ایڈیشنل انسپکٹر جنرل پولیس ( اے آئی جی ) فہیم عباسی کو ان کے عہدے پر بحال کر دیا گیا ، فہیم عباسی نے بطور اے آئی جی نیشنل ایکشن پلان کے حوالہ سے ایک پریس کانفرنس کی تھی جس میں بعض کالعدم تنظیموں کے آزادکشمیر میں موجودگی اور متوقع کاررروائی کے حوالہ سے میڈیا کو بتایا تھا ، پریس کانفرنس کے منظر عام پر آنے کے بعد اے آئی جی پولیس کو معطل کرکے سنیئر ممبر بورڈ آف ریونیو سردار نعیم شیراز خان کی سربراہی میں تین رکنی کمیٹی قائم کی گئی تھی جس کے ذمے انکوائری کرکے رپورٹ پیش کرنے کا کام سونپا گیا تھا ، ، تقریباًدو ہفتے قبل انکوائری کمیٹی کا اجلاس بھی ہوا تھا تاہم یہ علم نہیں ہو سکا کہ انکوائری کمیٹی نے رپورٹ پیش کی یا نہیں تاہم گزشتہ روز سروس ٹربیونل نے انہیں اپنے عہدے پر بحال کردیا ، اے آئی جی فہیم عباسی اپنی پوری سروس میں ’’متنازعہ‘‘ رہے ہیں اور کئی بار ماضی میں معطل رہے ، موجودہ متنازعہ پریس کانفرنس کے حوالہ سے حکومت کا موقف تھاکہ وہ پریس کانفرنس کرنے سے پہلے اجازت لینے کے پابند تھے جو انہوں نے نہیں لی ، اور ایسی باتوں کو قبل از وقت بیان کردیا جو ابھی بیان نہیں کی جانی تھیں ، تاہم اے آئی جی کا کہنا تھا کہ انہوں نے کوئی غلط کام نہیں کیا ۔



Head Office Dharti : 0092 5824 445864
E-mail:dailydhartiajk@gmail.com

   A PROJECT OF : EARTH VISSION PUBLICATION PVT.LTD

Powered by Solution's