جمعرات 09 جولائی 2020ء
جمعرات 09 جولائی 2020ء

اہم خبریں

آزاد کشمیر میں مزید25 افراد میں کرونا وائرس کی تصدیق

مظفرآباد (پی آئی ڈی) آزادکشمیر میں گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران مزید25 افراد میں کرونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے جبکہ129کرونا کے مریض صحت یاب ہو ئے اور ایک کرونا کے مریض کی موت ہوئی جبکہ 235نئے افراد کے کرونا کے شبہ میں ٹیسٹ لیے گئے۔ نئے سامنے آنے والے25کیسز میں سے 03کا تعلق مظفرآباد،05کا جہلم ویلی،10کا میرپور،1کا بھمبراور06کا کوٹلی سے ہے جبکہ کوٹلی میں ایک شخص کرونا کی وجہ سے فوت ہوا۔آزادکشمیر میں اب تک16674 افرادکے ٹیسٹ لیے گئے جن میں سے16622کے رزلٹ آچکے ہیں اور1160افراد میں کرونا وائرس کی موجودگی پائی گئی ہے جن میں سے686افراد صحت یاب ہو چکے ہیں اور انہیں ڈسچارج کر دیا گیا ہے جبکہ441 مریض زیر علاج ہیں اور 33 مریضوں کی موت ہوئی ہے.جن میں سے 13کا تعلق مظفرآباد،04کا راولاکوٹ،04کا باغ، 2کاتعلق سدھنوتی ،5کاتعلق میرپور اور04کابھمبر اور ایک کا کوٹلی سے ہے۔محکمہ صحت عامہ کی جانب سے جاری رپورٹ کے مطابق آزادکشمیر میں صحت یاب ہونے والے686 افرادمیں سے مظفرآبادسے287،  جہلم ویلی سے12،  نیلم سے 7، راولاکوٹ سے53، باغ سے65، حویلی سے 07،سدھنوتی سے46،میرپور سے 82، بھمبر سے85جبکہ کوٹلی سے42 مریض صحت یاب ہوئے جنہیں ڈسچارج کر دیا گیا ہے۔کرونا کے441 مریضوں میں سے317 مریضوں کو حکومت آزادکشمیر کی پالیسی کے تحت مختلف اضلاع میں ہوم آئسولیشن میں رکھا گیا ہے جبکہ124مریض آزادکشمیر کے مختلف ہسپتالوں میں زیر علاج ہیں جن میں سے آئسولیشن ہسپتال مظفرآبادمیں 10،آئسولیشن سینٹر نیوپی ایم ہاوس مظفرآباد15،ڈی ایچ کیو ہسپتال جہلم ویلی میں 01،،سی ایم ایچ راولاکوٹ میں 5، ڈی ایچ کیو باغ میں 03،ڈی ایچ کیو حویلی میں 03،ڈی ایچ کیو سدھنوتی میں 10،ڈی ایچ کیو میرپور میں 42، نیو سٹی ہسپتال میرپور03، ڈی ایچ کیو بھمبر میں 21، ڈی ایچ کیو کوٹلی میں 11مریض زیر علاج ہیں۔رپورٹ کے مطابق14795افراد میں کرونا وائرس کی موجودگی نہیں پائی گئی اور52افراد کے ٹیسٹ کے رزلٹ آنا باقی ہیں۔نئے افراد کے کرونا کے ممکنہ کیسز کے حوالہ سے لیے گے ٹیسٹ کی رپورٹ ایک دو روز میں آجائے گی۔ رپورٹ کے مطابق تمام اضلاع میں 58قرنطینہ سینٹرز قائم کیے گئے ہیں۔ تمام انٹری پوائنٹس پر محکمہ صحت کا عملہ موجود ہے جو ہمہ وقت مسافروں کی سکریننگ کررہا ہے۔ویرالوجی لیب عباس انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز، ڈویڑنل ہیڈکوارٹر ہسپتال میرپوراور سی ایم ایچ راولاکوٹ میں پی سی آر ٹیسٹنگ ہو رہی ہے۔ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے تعاون سے آزادکشمیرمیں قائم تمام آئسولیشن سنٹرز میں انفکیشن، پری وینشن اینڈ کنٹرول (IPC)ٹریننگ کا آغاز کر دیا گیا ہے۔ تمام انٹری پوائنٹس پر ضلعی ریپڈریسپانس ٹیمیں اور صحت کا عملہ کرونا سے متاثرہ علاقوں سے آنے والے لوگوں کی مکمل سکریننگ کر رہا ہے۔آزادکشمیر کے اضلاع سدھنوتی، بھمبر، کوٹلی، میرپور، نیلم، باغ، اور مظفرآباد کی ریپڈ ریسپانس ٹیمیں کرونا وائرس کے تصدیق شدہ افراد سے رابطہ میں رہنے والے افراد سے رابطہ کر کے انہیں قرنطینہ سنٹرز اور ہوم قرنطینہ کر رہی ہیں۔ آزادکشمیر کے تمام انٹری پوائنٹس پر پولیس اور انتظامیہ کی ٹیمیں کام کررہی ہیں جبکہ قرانطینہ مراکز کی دیکھ بحال انتظامیہ کررہی ہے اور صحت کی ٹیمیں بھی ان کے ساتھ موجود ہیں۔  

پاکستان

پٹرول کی قیمت میں 20روپے کمی کا امکان

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) پٹرول کی قیمت میں 20 روپے کمی کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔تفصیلات کے مطابق کورونا وائرس کے باعث پریشان حال عوام کے لیے بڑی خوشخبری آئی ہے،پیٹرول کی قیمتوں پر عوام کو 20 روپے سے زائد کا ریلیف دیا جاسکتا ہے۔حکومت نے رواں ماہ 28 ڈالر 51 سینیٹ فی بیرل تیل خریدا تھا۔درآمدی تیل کی لاگت 36 ڈالر 33 سینٹ فی بیرل بنتی ہے۔پٹرول کی فی لیٹر قیمت 35 روپے 25 پیسے بنتی ہے۔حکومت پیٹرول پر 35 روپے ٹیکس وصول کرتی ہے۔ٹیکس شامل کرکے پٹرول کی قیمت 70 روپے 25 پیسے فی لیٹر بنتی ہے۔جبکہ اس وقت پیٹرول کی قیمت عوام کے لیے 97 روپے فی لیٹر ہے۔لہذا امید ظاہر کی جارہی ہے کہ عوام کو پٹرول پر 20 روپے سے زائد ریلیف دیا جاسکتا ہے۔دوسری جانب لاک ڈاؤن میں نرمی کے بعد سے کاروبار زندگی جزوی طور پر بحال ہوگئی ہے۔وفاقی حکومت کی جانب سے لاک ڈاؤن میں نرمی کے بعد پٹرولیم مصنوعات کی کھپت میں بھی قدرے بہتری آنے کے امکانات ہیں،ملک بھر میں پٹرولیم مصنوعات کی بلا تع

انٹرنیشنل

فورڈ“اور جنرل الیکٹرک کا معاہدہ، 100 دنوں میں 50 ہزار وینٹی لیٹرز تیار کرنے کا منصوبہ

” نیویارک (مانیٹرنگ ڈیسک)امریکہ کی گاڑیاں بنانے والے کمپنی فورڈ اور جنرل الیکٹرک اب مل کر صرف 100 دنوں میں 50 ہزار وینٹی لیٹرز بنائیں گی۔خیال رہے کہ امریکہ میں کورونا وائرس کے باعث پوری دنیا میں اب تک سب سے زیادہ کیسز سامنے آئے ہیں جبکہ اموات میں بھی تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے۔ بی بی سی کے مطابق دونوں کمپنیوں کا کہنا ہے کہ وہ وینٹی لیٹرز کا غیر پیچیدہ ڈیزائن بنائیں گی اور مشیگن میں فورڈ کے گاڑیاں بنانے والے پلانٹ کو وینٹی لیٹرز بنانے کے لیے استعمال کریں گے۔تاہم یہ کام وہ 20 اپریل سے شروع کریں گے، اور اس آسان ڈیزائن کی بدولت وہ جلد از جلد زیادہ سے زیادہ وینٹی لیٹرز بنا سکیں گے۔خیال رہے کہ امریکی صدر ڈانلڈ ٹرمپ نے دونوں کمپنیوں پر اس حوالے سے اپنی ٹویٹس میں تنقید کی تھی تاہم اب وہ ان کی تعریف کر رہے ہیں۔فورڈ تین شفٹس کے ذریعے 24 گھنٹے کام کر کے وینٹی لیٹرز بنانے کی کوشش کرے گا تاہم ماہرین کا کہنا ہے کہ امریکہ میں وینٹی لیٹرز کی سب سے ز

آج کااخبار

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

کالم